منتخب غزلیں

جنت جو ملے لا کر میخانے میں رکھ دینا کوثر مرے چھو…

جنت جو ملے لا کر میخانے میں رکھ دینا
کوثر مرے چھوٹے سے پیمانے میں رکھ دینا

میت نہ مری جا کے ویرانے میں رکھ دینا
پیمانوں میں دفنا کر میخانے میں رکھ دینا

سجدوں پہ نہ دے مجھ کو ارباب ِحرم طعنے
کعبے کا کوئی پتھر بت خانے میں رکھ دینا

وہ جس سے سمجھ جائے روداد مرے غم کی
ایسا بھی کوئی ٹکڑا افسانے میں رکھ دینا

اک جام سے مے کش کا کیا ہو گا بھلا ساقی
میخانے کا میخانہ پیمانے میں رکھ دینا

سیماب یہ فطرت کا ادنیٰ سا اشارہ ہے
خاموشی سے اک بجلی پروانے میں رکھ دینا

(سیماب اکبر آبادی)

متعلقہ تحاریر

Back to top button
تفکر ڈاٹ کام
situs judi online terpercaya idn poker AgenCuan merupakan salah satu situs slot gacor uang asli yang menggunakan deposit via ovo 10 ribu, untuk link daftar bisa klik http://faculty.washington.edu/sburden/avm/slot-dana/