افسانے

جوابِ جاہلاں با شد خموشی۔۔۔صادقہ نصیر -مکالمہ

جوابِ جاہلاں با شد خموشی

چپ سی سادھ لی

بہت گہری خموشی

اس گمان میں کہ

سب جاہل۔

میں قابل

یا پاگل۔۔۔

اک خواہش آخر

کہ سب قابل

اور میں

جاہل۔۔۔۔۔۔۔۔ ہو جاؤں

سوال کروں جہالت میں لتھڑا ہوا

اور ترکی بہ ترکی جواب منہ پر ماروں

اور

سب قابل

چپ سادھ لیں

گہری چپ

درد بھری

جیسی میں نے سادھ لی

جواب ندارد ۔۔۔۔۔میں جاہل

زور سے ہنسوں

قابلوں کا مذاق اڑاؤں

زور کا ٹھٹھا

آنکھوں میں سجائے

تضحیک کا جھنڈا ۔۔۔۔۔

خموشی کے کرب

میں تڑپتے دیکھوں

جواب دینےکی حسرت میں۔۔

چپ لوگ جیسے میں

جواب جاہلاں

خموشی باشد۔




بشکریہ

متعلقہ تحاریر

جواب دیں

Back to top button
تفکر ڈاٹ کام
situs judi online terpercaya idn poker AgenCuan merupakan salah satu situs slot gacor uang asli yang menggunakan deposit via ovo 10 ribu, untuk link daftar bisa klik http://faculty.washington.edu/sburden/avm/slot-dana/