عکسِ خیال

وہ جو عشق پیشہ تھے دل فروش تھے ، مَر گئے وہ ھَوا …

وہ جو عشق پیشہ تھے
دل فروش تھے ، مَر گئے
وہ ھَوا کے ساتھ چلے تھے
اور ھَوا کے ساتھ بکھر گئے

وہ عجیب لوگ تھے
برگِ سبز کو برگِ زرد کا
رُوپ دَھارتے دیکھ کر
رُخِ زرد اَشکوں سے ڈھانپ کر
بھرے گلشنوں سے مثالِ سایۂ اَبر
پل میں گزر گئے

وہ قلندرانہ وقار تن پہ لپیٹ کر
گھنے جنگلوں میں گھری ھُوئی
کُھلی وادیوں کی بَسیط دُھند میں
رفتہ رفتہ اُتر گئے

”احمّد ندیم قاسمی“


بشکریہ
https://www.facebook.com/Inside.the.coffee.house

متعلقہ تحاریر

جواب دیں

Back to top button
تفکر ڈاٹ کام
situs judi online terpercaya idn poker AgenCuan merupakan salah satu situs slot gacor uang asli yang menggunakan deposit via ovo 10 ribu, untuk link daftar bisa klik http://faculty.washington.edu/sburden/avm/slot-dana/