عکسِ خیال

دیکهی ھیں‌ جب سے ھم نے ، نذریں اُتاریاں ھیں سارے ج…

دیکهی ھیں‌ جب سے ھم نے ، نذریں اُتاریاں ھیں
سارے جہاں سے اچهی ، آنکهیں تمہاریاں ھیں

گل رنگ مہ وشوں پہ ، آتا ھے رشک ھم کو
یہ صُورتیں الٰہی !! کس نے سنواریاں ھیں ؟؟

اک بار تو کبهی تم ، ھلکی سی چَهب دکها دو
اس آرزو میں‌ ھم نے ، عمریں گزاریاں ھیں

چہرے پہ کالی زُلفیں ، ڈهاتی قیامتیں ھیں
مصری کی طرح میٹهی ، باتیں تمہاریاں ھیں

تم بن یہاں پہ جینا ، جینا ھے کیسا جینا
یہ رونقیں‌ جہاں کی ، تم سے ھی ساریاں ھیں

جن حُسن کو ابهی تک ، ھم نے نہیں‌ بهلایا
وه جهیل جیسی آنکهیں ، غزلیں‌ ھماریاں ھیں

”ڈاکٹر حسن رضوی“


بشکریہ
https://www.facebook.com/Inside.the.coffee.house

متعلقہ تحاریر

جواب دیں

Back to top button
تفکر ڈاٹ کام
situs judi online terpercaya idn poker AgenCuan merupakan salah satu situs slot gacor uang asli yang menggunakan deposit via ovo 10 ribu, untuk link daftar bisa klik http://faculty.washington.edu/sburden/avm/slot-dana/