یہ ایک فیکٹ ہے کہ انسان اب تک چھ بار چاند پر لینڈ …

[ad_1]

یہ ایک فیکٹ ہے کہ انسان اب تک چھ بار چاند پر لینڈ کرچکا ہے… اپالو مشنز پر واپسی کے دوران خلاء باز بہت سا سامان وہیں چاند پر چھوڑ آئے، جو آج بھی چاند کی سطح پر بکھرا پڑا ہے.. مستقبل میں جب انسان چاند پر بیس کیمپس بنائے گا تو یہ ساز و سامان اسے فلکیاتی جدوجہد کی کہانی سنائیں گے.. ہوسکتا ہے کہ مستقبل کے انسان ان پر ریسرچ بھی کریں… یہ عین ممکن ہے چاند پر موجود ان ساز و سامان میں زمینی بیکٹیریا اور دیگر خوردبینی جاندار آج بھی وہاں زندہ ہوں، یعنی ایک طرح سے ہم چاند کو contaminate کرچکے ہوں… یہ کس حد تک possible ہے؟ یہ دعویٰ میں اس لیے کررہا ہوں کہ ایک ایسا واقعہ ہم پہلے بھی دیکھ چکے ہیں جب نومبر 1969ء کو اپالو 12 مشن چاند پر لینڈ ہوا تو چاند پر پتھر جمع کرتے ہوئے خلاء بازوں کو سروئیر پراجیکٹ کی سروئیر 3 نامی خلائی گاڑی بھی ملی جس نے اپریل 1967ء کو چاند پر لینڈ کیا تھا (سروئیر پراجیکٹ وہ ربورٹک مشن تھا جو اپالو سے پہلے چاند پر بھیجا گیا تھا تاکہ اچھی لینڈنگ سائٹس کا انتخاب ہوسکے)، بہرحال سر وئیر 3 کے کچھ حصے خلاء باز تحقیق کی غرض سے اپنے ساتھ لے آئے جب زمین پر آکر ان خلائی حصوں پر تحقیق کی گئی تو سائنسدانوں کا منہ حیرت سے کھُلا کا کھُلا رہ گیا کیونکہ سروئیر 3 پر موجود بیکٹیریا چاند کی سطح پر 2 سال گزارنے کے باوجود زندہ اور صحیح سلامت تھے…
یہ انسانی تاریخ کا پہلا واقعہ تھا جب کسی ایسی مشین پر تحقیق کی گئی جو 2 سال زمین سے باہر کسی علاقے میں گزار کر آئی تھی.. اس واقعہ سے سائنسدانوں کو سبق ملا کہ یہ جراثیم انتہائی سخت ماحول میں بھی زندہ رہ لیتےہیں… اسی خاطر اب سائنسدان کسی خلائی گاڑی کو کسی بھی سیارے کے کسی ایسے علاقے میں لینڈ نہیں کرتے جہاں زندگی کا چانس موجود ہو… اسی خاطر کچھ سال قبل کیسینی خلائی گاڑی کو زحل سے ٹکرا کر تباہ کردیا گیا کہ کہیں یہ اس کے چاند انسلادس سے نہ ٹکرا جائے کیونکہ وہاں گرم پانی کے سمندروں کے باعث زندگی کی موجودگی کا بہت زیادہ چانس ہے… اسی طرح مریخ کی سطح پر مشن اتارنے سے پہلے سائنسدان بہت سوچ بچار کرتے رہے کہ کہیں زمین کے جراثیم مریخ پر پھیل گئے تو بعد میں تحقیق سے معلوم نہیں ہوپائے گا کہ آیا کہ مریخ پر پہلے سے کوئی زندگی موجود تھی کہ نہیں… مریخ پر لینڈنگ سے پہلے انسانوں کے نزدیک سب سے اہم سوال یہی ہوگا کہ اگر وہاں کوئی مارشینز ہوئے تو ہم کہیں ان کی نسل کو تباہ تو نہیں کردیں گے… اگرچہ ہمیں ابھی تک کائنات میں اپنے سوا کہیں کوئی زندگی کی رمق نہیں مل پائی مگر فلکیات دانوں کا اندازہ ہے کہ کائنات زندگی سے بھرپور ہوسکتی ہے… یہ عین ممکن ہے کہ زمین پر زندگی ہماری کہکشاں کے کسی گوشے سے ہجرت کر کے آئی ہو…
محمد شاہ زیب صدیقی
زیب نامہ
کیا زمین پر زندگی مریخ سے منتقل ہوئی؟ اس متعلق ایک اُردو ڈاکومنٹری
https://youtu.be/zRC7FZXTwWs
کیا انسان واقعی چاند پر قدم رکھ چکا ہے؟ اس متعلق اُردو ڈاکومنٹری
https://youtu.be/JaNrCb_VO3s
#زیب_نامہ
#اپالومشن #ApolloFacts


بشکریہ
https://www.facebook.com/groups/1876886402541884/permalink/2790812547815927

Leave your vote

0 points
Upvote Downvote

Total votes: 0

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

جواب چھوڑیں

Hey there!

Forgot password?

Forgot your password?

Enter your account data and we will send you a link to reset your password.

Your password reset link appears to be invalid or expired.

Close
of

Processing files…

Situs sbobet resmi terpercaya. Daftar situs slot online gacor resmi terbaik. Agen situs judi bola resmi terpercaya. Situs idn poker online resmi. Agen situs idn poker online resmi terpercaya. Situs idn poker terpercaya.

situs idn poker terbesar di Indonesia.

List website idn poker terbaik.

Situs slot terbaru terpercaya

slot hoki terpercaya

slot online gacor Situs IDN Poker Terpercaya slot hoki rtp slot gacor slot deposit pulsa
Bergabung di Probola situs judi bola terbesar dengan pasaran terlengkap bergabunglah bersama juarabola situs judi bola resmi dan terpercaya hanya di idn poker terpercaya 2022 daftar sekarng di agen situs slot online paling baik se indonesia
trading binomo bersama https://binomologin.co.id/ daftar dan login di web asli binomo