میں کیوں کہوں کہ زمانہ نہیں ہے راس مجھے میں دیکھت…

[ad_1]

میں کیوں کہوں کہ زمانہ نہیں ہے راس مجھے
میں دیکھتا ہوں زمانے کو راس میں بھی نہیں
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
جبیں سے مٹ نہ سکے گی یہ وقت کی تحریر
نشانِ زخم رہے گا جو زخم بھر بھی گیا
۔۔۔۔۔۔۔۔
ہر ایک موڑ پہ پیچھے پلٹ کے دیکھتا ہوں
وہ گردِ رہ سہی ہمراہ تو کوئی ہے
۔۔۔۔۔۔۔۔
آج ممتاز شاعر سبط حسن خاور رضوی کا یومِ پیدائش ہے
June 01, 1938

خاور رضوی کا اصل نام سید سبط حسن رضوی اور تخلص خاورؔ ہے۔ وہ ایک سید خاندان میں یکم جون 1938ء کو ( کچھ کے نزدیک 1936ء مگر یہ درست نہیں ان کے سرکاری کاغذات کے مطابق ان کا یومِ پیدائش 1938ء ہے) پیدا ہوۓ۔ انھوں نے شاعری کی تعلیم اپنی والدہ عابدہ بیگم جو کہ خود ایک نامور شاعرہ تھیں۔ خاور رضوی کے ماموں اور خالہ بھی اعلٰی پاۓ کے شاعر تھے۔ انکے والد سید نجم الحسن رضوی نے فوج میں اپنی خدمات انجام دی اور انھوں نے خاوررضوی کا ساتھ دیا اور انکا حوصلہ بڑھایا۔ خاور رضوی نے ابتدائی تعلیم گھر پر ہی حاصل کی۔ اسکے بعد انھوں نے گورنمنٹ سکول کیمبل پور (اٹک) سے میٹرک کیا اس کے بعد گریجویشن انھوں نے گورنمنٹ کالج اٹک سے کی۔
اس کے بعد پوسٹ گریجویشن لیکچرر پنجاب یونیورسٹی لاہور سے کی۔ تعلیم مکمل کرنے کے بعد انھوں نے تین نوکریاں کیں۔سب سے پہلے وہ استاد تعینات ہوۓ اس کے بعد بنکنگ کے شعبے میں گۓ اور اس کے بعد سوشل سیکورٹی میں رہے اور اسی محکمے میں ڈاائریکٹر کے عہدے پر تعینات رہے۔ اور پھر اچانک گھر سے ڈیوٹی پر جا رہے تو ہارٹ اٹیک ہونے کی وجہ سے 15 نومبر 1981ء کو انتقال کر گۓ۔انھیں احمد پور سیال ضلع جھنگ کے قبرستان میں سپرد خاک کیا گیا۔
….
وہ خود پرست ہے اور خود شناس میں بھی نہیں
فریب خوردۂ وہم و قیاس میں بھی نہیں
فضائے شہر طلب ہے انا گزیدہ بہت
ادا شناس رہ التماس میں بھی نہیں
میں کیوں کہوں کہ زمانہ نہیں ہے راس مجھے
میں دیکھتا ہوں زمانے کو راس میں بھی نہیں
یہ واقعہ کہ تجھے کھل رہی ہے تنہائی
یہ حادثہ کہ ترے آس پاس میں بھی نہیں
ہوا کرے جو ہے خاورؔ فضا خلاف مرے
اسیر حلقۂ خوف و ہراس میں بھی نہیں
…..
جتنا برہم وقت تھا اتنے ہی خود سر ہم بھی تھے
موج طوفاں تھا اگر پل پل تو پتھر ہم بھی تھے
کاش کوئی اک اچٹتی سی نظر ہی ڈالتا
چور تھے زخموں سے لیکن ایک منظر ہم بھی تھے
گر وبال دوش تھا سر ہاتھ میں تیشہ بھی تھا
اک طرف سے تو نصیبے کے سکندر ہم بھی تھے
خود شناسی کا بھلا ہو راکھ کی چٹکی ہیں آج
ورنہ اک رخشندہ و تابندہ گوہر ہم بھی تھے
سطح بیں تھے لوگ کیا پاتے ہماری وسعتیں
جھانکتا دل میں کوئی تو اک سمندر ہم بھی تھے
چڑھتے سورج کی پرستش گو تھا دنیا کا اصول
ہم کسی کو پوجتے کیسے کہ خاورؔ ہم بھی تھے


[ad_2]

Leave your vote

0 points
Upvote Downvote

Total votes: 0

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

جواب چھوڑیں

Hey there!

Forgot password?

Forgot your password?

Enter your account data and we will send you a link to reset your password.

Your password reset link appears to be invalid or expired.

Close
of

Processing files…

Situs sbobet resmi terpercaya. Daftar situs slot online gacor resmi terbaik. Agen situs judi bola resmi terpercaya. Situs idn poker online resmi. Agen situs idn poker online resmi terpercaya. Situs idn poker terpercaya.

situs idn poker terbesar di Indonesia.

List website idn poker terbaik.

Situs slot terbaru terpercaya

slot hoki terpercaya

Bergabung di Probola situs judi bola terbesar dengan pasaran terlengkap bergabunglah bersama juarabola situs judi bola resmi dan terpercaya hanya di idn poker terpercaya 2022 daftar sekarng di agen situs slot online paling baik se indonesia
trading binomo bersama https://binomologin.co.id/ daftar dan login di web asli binomo