کتب بینی اور کتابوں کا عالمی دن

دنیا کے 100 سے زائد ممالک میں 23 اپریل کتاب کے عالمی دن کے طور پر منایا جاتا ہے جبکہ امریکہ اور برطانیہ میں 4 مارچ  کتاب کے عالمی دن کے طور پر منایا جاتا ہے۔ کتابوں کے عالمی دن کا آغاز 1616ءمیں اسپین سے ہوا ،اسپین کے شمال مشرق کیٹولینا میں ہر سال 23 مارچ سے 25 مارچ تک لوگ اپنی عزیز خواتین کو گلاب کے پھول پیش کرتے اور مشہور ناول، شیکسپئیر کے ڈرامے ایک دوسرے کو سناتے گذرتے وقت کے ساتھ ساتھ یہ روایت دوسرے کئی علاقوں میں بھی مشہور ہوئی  جس نے بعد میں کتابوں کے عالمی دن کی شکل اختیار کرلی۔
کتابوں کے عالمی دن منانے کا باقاعدہ آغاز اس وقت سے ہوا جب  1995 میں  اقوام متحدہ کے ادارے یونیسکو کی جنرل کونسل کا اجلاس  جو کہ فرانس میں ہوا جس میں اس ادارے نے 23 اپریل کو ورلڈ بک ڈے اینڈ کاپی رائٹس ڈے قرار دیا جس کے بعد دنیا کے کئی ممالک نے اسے منانے کا آغاز کیا،کتاب انسان کی زندگی کا لازمی جز ہے  اور کتاب کا تعلق انسان سے بڑا پرانا ہے یہ انسان کے علم و ہنر اور ذہنی استعداد میں بھی بے پناہ اضافہ کرتی ہےلیکن ایک تلخ حقیقت یہ بھی ہے کہ کتب بینوں کی تعداد میں روز بروز کمی آرہی ہے جس کی ایک بڑی وجہ مہنگائی جب کہ دوسری اہم وجہ انٹرنیٹ اور موبائیل پر آن لائن کتابوں کی دستیابی   ہے جس طرح انٹرنیٹ ٹیکنالوجی  آنے کے بعد ہاتھ سے لکھے اور بذریعہ ڈاک بھیجے جانے خطوط کا سلسلہ بہت کم ہوگیا ہے اسی طرح کتب بینی کے شوق میں بھی کمی ہوئی  یہی وجہ ہے کہ اب کتابوں کی رونمائی کے پروگراموں میں بھی کافی کمی آچکی ہے اس بات میں کوئی دوسری رائے نہیں کہ کتابیں اب بھی شائع کی جارہی ہیں اور آج بھی کتابوں کو پڑھنے والے قدر دان موجود ہیں جو دستی کتابیں پڑھتے ہیں ،میں اگر کتب بینی کی حوالے سے اس دور کا موازنہ آج سے  پندہ بیس سال پہلے کے دور سے کروں تو اس وقت لوگ بہت شوق سے کتابیں پڑھا کرتے تھے اکثر دوران سفر  لوگوں کے ہاتھوں میں کوئی نہ کوئی کتاب ضرور ہوتی تھی اور یہ منظر کراچی میں چلنے والی سرکلر ریلوے میں تو بہت زیادہ ہی دیکھائی دیتا تھا لیکن افسوس آج انہیں میں سے کئی ہاتھوں میں صرف موبائیل فون ہی نظر آتا ہے اب ان مسافروں کی ہمسفر کتاب  کے بجائے موبائیل فون ہوتے ہیں  اس دور میں جہاں کتب بینی اوپر بیان کردہ وجوہات کی وجہ سے معدوم ہوتی جارہی ہے وہیں اس میں کچھ حکمرانوں کی ستم ظریفی بھی ہے جہاں عوامی لائبریریوں کو تیزی سے ختم کرکے اس شوق ہر ایک اور قدغن  لگا دیا گیا بہت سی کتابوں کے زخیروں پر مبنی ملک میں نیشنل سینٹر لائبریریوں کو کافی عرصہ سے بند کردیا گیا جہاں ان نیشل سینٹر لائبریریوں میں کتابوں کے پڑھنے والے کتب بینی میں وقت گذارا کرتے تھے وہیں ان سینٹروں میں علمی اور ادبی محفلیں ہوا کرتی تھی۔
اب ضرورت اس امر کی ہے کہ حکومت نہ صرف کتابوں کی قیمتیں کنٹرول کرنے میں کردار ادا کرے بلکہ تمام اہم جگہوں پر  دوبارہ ان پبلک لائبریریوں کو فوری طور پر بحال کرے تاکہ معاشرے میں لوگوں  بل خصوص  نوجوان نسل میں مطالعہ کی اہمیت  اور افادیت کو اجاگر کیا جاسکےاور اس سنہرے دور کا دوبارہ آغاز کیا جاسکے جب ہر روز ہی علمی اور ادبی محفلیں سجا کرتی تھیں جو معاشرے میں سدھار پیدا کرنے میں اہم کردار ادا کرتے تھیں۔

آئیے آج سے ہم اپنے آپ سے عہد کریں کہ اچھی کتابوں سے دوستی کرینگے اور رات کو سونے سے پہلے کسی بہترین کتاب کا کچھ حصہ ضرور پڑھیں گے اپنے بچوں میں کتابیں پرھنے کا شوق پیدا کریں اور انہیں اس کی اہمیت اور افادیت سے آگاہ کریں ۔

محمد ارشد قریشی

Leave your vote

0 points
Upvote Downvote

Total votes: 0

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

جواب چھوڑیں

Hey there!

Forgot password?

Forgot your password?

Enter your account data and we will send you a link to reset your password.

Your password reset link appears to be invalid or expired.

Close
of

Processing files…

Situs sbobet resmi terpercaya. Daftar situs slot online gacor resmi terbaik. Agen situs judi bola resmi terpercaya. Situs idn poker online resmi. Agen situs idn poker online resmi terpercaya. Situs idn poker terpercaya.

situs idn poker terbesar di Indonesia.

List website idn poker terbaik.

Situs slot terbaru terpercaya

slot hoki terpercaya

slot online gacor Situs IDN Poker Terpercaya slot hoki rtp slot gacor slot deposit pulsa
Bergabung di Probola situs judi bola terbesar dengan pasaran terlengkap bergabunglah bersama juarabola situs judi bola resmi dan terpercaya hanya di idn poker terpercaya 2022 daftar sekarng di agen situs slot online paling baik se indonesia
trading binomo bersama https://binomologin.co.id/ daftar dan login di web asli binomo