(ایک مختصر ڈینش کہانی ) کیا یہ تم ہو؟ از: وِلّی سؤ…

[ad_1] (ایک مختصر ڈینش کہانی )
کیا یہ تم ہو؟
از: وِلّی سؤرنسن
ترجمہ: نصر ملک ( ڈنمارک)
__________________
وِلّی سؤرنسن ڈنمارک کے فلاسفر ادیبوں میں سرفہرست شمار ہوتے ہیں۔ وہ اپنی چھوٹی چھوٹی کہانیوں’ افسانوں اور گہرے فلسفیانہ ناولوں کی وجہ سے مغربی یورپی ممالک’ امریکہ و کینیڈا میں اپنے لئے ایک منفرد مقام رکھتے ہیں۔ انہوں نے ”کافکا” کی تخلیقات کو ڈینش زبان میں ترجمہ کرکے ان میں پوشیدہ بین السطور آفاقی پیغام کو اجاگر کرنے کی جو کوششیں کی ہیں ان کی وجہ سے انہیں دورحاضر میں کافکا پر ایک اتھارٹی مانا جاتا ہے۔
خود ان کی اپنی تحریروں میں مشہور زمانہ ڈینش فلاسفر سؤرن کرکے گورڈ کی واضح جھلک دکھائی دیتی ہے۔ وہ کئی کتابوں کے مصنف ہیں اور ان کی تخلیقات میں سے اکثر کا ترجمہ شمال یورپی ممالک کی زبانوں کے علاوہ انگریزی اور مشرقی یورپی زبانوں میں بھی ہو چکا ہے۔ ان کی ڈینش اساطیر پر لکھی ہوئی انعام یافتہ کتاب “RAGNAROK” کا اردوترجمہ بعنوان ’’ دیوتاؤں کا زوال‘‘ میں (نصر ملک) نے کیا ہے اور یہ”ایم پبلیکیشنز” گوجرانوالہ’ پاکستان سے کتابی صورت میں شایع بھی ہو چکا ہے۔ آپ احباب کے لئے وِلّی سؤرنسن کی ایک مختصر سی کہانی حاضر ہے ۔ گر قبول افتد ——-!
(نصر ملک ۔ کوپن ہیگن ۔ ڈنمارک)
____________________

میں نے ہمیشہ ہی اس سوال کو کہ ”کیا یہ تم ہو؟” ایک بے معنی سوال تصور کیا ہے کیونکہ اس کا جواب صرف ایک ”ہاں” کے سوا کچھ اور ہو ہی نہیں سکتا۔ ایک وہ سوال جس کا جواب صرف ”ہاں” میں دیا جائے بذاتِ خود وہ کوئی سوال ہو ہی نہیں سکتا۔

ذرا سوچئیے کہ ایک عورت اندھیرے میں اپنے گھر کےبند دروازے کے باہر کھڑے اپنے شوہر سے پوچھتی ہے کہ ……… ”کیا یہ تم ہو؟” وہ عورت اُسے دیکھ تو سکتی نہیں اور نہ ہی اُس کی آواز پہچان سکتی ہے اور محض یہ سوال اس لئے پوچھتی ہے کیونکہ اسے خدشہ اور ڈر ہوتا ہے کہ شاید دروازے پر موجود’ اس کا شوہر نہ ہو۔ اب اگر یہ فرد اُس عورت کا شوہر نہ ہو تو بھی اندھیرے میں کھڑے شخص سے یہی سوال کرے گی یعنی …….. ”کیا یہ تم ہو؟” اب دروازے پر موجود یہ شخص کوئی راہ بھولا ہوا اجنبی بھی ہو سکتا ہے یا پھر کوئی بری نیت رکھنے والا فرد بھی۔ ایسی صورت میں اس سے یہ پو چھا جانا کہ …….. ”کیا یہ تم ہو؟” بے معنی ہی تو ہے کیونکہ متعلقہ شخص کا جواب یقیناً اثباتی ہو گا یعنی کہ وہ ”بذاتِ خود” ہی ہے لیکن’ اس میں دیکھیئے کہ دراصل وہ تو ”وہ”متعلقہ فرد ہے ہی نہیں۔ اس سوال کے اگر کوئی معنی ہو سکتے ہیں تو پھر عورت کو یوں پوچھنا چاہیئے تھا کہ …….. ”کیا تم میرے شوہر ہو؟” یا پھر وہ اس سوال کو یوں بھی پوچھ سکتی تھی کہ …….. ”کیاتم کائے ہو؟” (اگر اس کے خاوند کا نام یہی ہے تو ‘ لیکن یہ نام تو کسی دوسرے فرد کا بھی ہو سکتا ہے۔ ہاں آپ یہ کہہ سکتے ہیں کہ پھر وہ ”کائے” کوئی اور ہو گا اور اس عورت کے شوہر سے مختلف بھی) یہ ممکن ہے کہ وہ اسی سے ملتا جلتا ہو جس کے بارے میں سوال کیا گیا تھا کہ …….. ”کیا یہ تم ہو؟”۔
”کیا یہ تم ہو؟” یہ سوال اگر کوئی معنی رکھتا ہے تو پھر حقیقتاً وہ کچھ اور ہی ہوں گے مثلاً ہم اپنے ہمعصروں کو محاورتاً کہہ سکتے ہیں کہ…….. ”یہ میں ہوں”۔ لیکن آپ ایسا تبھی کہتے ہیں جب آپ اپنے آپ کو کسی اور سے فاصلے پر رکھ رہے ہوتے ہوں۔ پرانے محاوروں میں اس طرح کے ”فاصلے اور قربت”کو اہمیت دی جاتی تھی اور اُن میں ”شناخت کی برقراریت” پر زور دیا جاتا تھا اور اُن کے بولے جانے سے متعلقہ شخص کی شناخت کا مسئلہ نہیں رہتا تھا لیکن’ عصر حاضر میں محاوروں کے استعمال میں ”شناخت” ظاہری عمل میں پوشیدہ ہو تی ہے اور اسی وجہ سے یہ کسی بھی وقت شک و شبہ سے دوچار ہوجاتی ہے۔ تبھی تو یہ سوال…….. ”کیا یہ تم ہو؟” اسی طرح ہی کے معنی رکھتا ہے۔ اس سوال کے یہ معنی بھی تو ہو سکتے ہیں کہ ”کیا حقیقتاً تم ہی ہو جو وہی کچھ کر رہے ہو جو تم ہی کو کرنا تھا ”۔ اب دیکھئیے آپ جو کہہ رہے ہیں اس کے معنی کیا نکلتے ہیں’ یہی نا کہ …….. ”یہ تم نہیں ہو بلکہ کوئی اور ہے جو تمھارے ذریعے عمل کر رہاہے ‘ باتیں کر رہا ہے؟”۔ہم اعتماد رکھتے ہیں کہ ہم ہی ہیں جوہیں اور ہمارے کہنے کے معنی و مطالب
وہی ہوتے ہیں جو ہم خود چاہتے ہیں کہ ہوں۔ ہم وہی کر رہے ہوتے ہیں جو ہمیں کرنا ہوتا ہے۔ میں اس بات کا کسی اور طرف سے ادراک یا تصور نہیں کر سکتا اور نہ ہی یہ سمجھ پایا ہوں کہ اس سوال کا جواب دینا اتنا مشکل کیسے ہو گیا ہے؟

آپ یقیناً اب یہ اعتراض کر سکتے ہیں کہ یہ سوال کہ ”کیا یہ تم ہو؟” ہرگز کوئی سوال ہی نہیں بلکہ یہ تو ایک طرح سے محض ہانک یا ایک تعجب پنے کا اظہار ہے۔ مثلاً اگر آپ کسی اجنبی سے ٹکرا جائیں اور اس سے پہلے کہ بڑبڑانا اور غصہ جھاڑنا شروع کر دیں وہ آپ کا کوئی ایک پرانا واقف کار نکل آتا ہے تو تب آپ صرف یہی تو کہتے ہیں نا کہ …….. ”اوہ! …….. کیایہ تم ہو؟”۔ اس صورت میں تعجب کا اظہار ” بذات خود ایک سوال بھی تو ہو سکتا ہے یعنی یہ کہ آپ کو خود یقین نہیں کہ یہ وہی شخص ہے جسے آپ بہت پہلے سے جانتے ہیں اور اس طرح یہ سوال ابھی تک بے تکا اور بے معنی ہے کیونکہ متعلقہ شخص اگر آپ کا جاننے والا نہیں بھی ہوگا تب بھی وہ جواب میں’ نہیں ‘ نہیں کہے گا۔ اب اگرآپ یقین رکھتے ہیں کہ یہ سوال پوچھنے کی اصل صورت یوں ہونی چاہئیے تھی کہ…….. ”او!…….. کیا یہ تم ہو!” کیونکہ آخر …….. وہ …….. ”وہ” تو ہے ہی جسے آپ …….. ”تم” کہہ رہے ہیں۔ اس طرح مجموعی طور پر یہ کہنا غلط ہے کہ متعلقہ شخص ”وہی” ہے جس پر آپ ”تم!” کا دعویٰ کر رہے ہیں۔ اب آپ یقین کے ساتھ نہیں کہہ سکتے کہ کون’ کون ہے اور ہم خود کون ہیں؟
”کیایہ تم ہو؟” اس بے معنی سوال کا جواب میں ”ہاں” میں نہیں دیتا۔ مجھے شاید جواب میں ” نہیں”
کہنے کی ترغیب دی جائے لیکن مجھے پختہ یقین ہے کہ جب مجھ سے یہ سوال کیا جاتا ہے کہ …….. ”کیا یہ تم ہو؟”…….. تو ”میں” کوئی ”اور” ہوتا ہوں لہٰذا میرا جواب یہی ہوتا ہے کہ ”شاید” یا ”ایسا ہی لگتا ہے” یا پھر اسی طرح سے ملتا جلتا کوئی اور جملہ۔ میرے اس جواب پر لوگ مطمئن دکھائی دیتے ہیں اور بعض اوقات تو میرے اس طرح کے جواب دینے پر وہ محظوظ ہوتے اور ہنس بھی دیتے ہیں دراصل وہ مجھ پر ہنستے ہیں کہ میں ”میں” ہوتا ہوں۔
آپ شاید سوچ رہے ہوں کہ میں اس سوال پر بہت زیادہ زور ڈال رہا ہوں حالانکہ بذاتِ خود یہ کوئی سوال ہے ہی نہیں۔ میں اس سے متفق نہیں ہوں۔ میرے خیال میں ایسا کوئی سوال ہی نہیں جو بہت زیادہ اہمیت رکھتا ہو۔ میں بذاتِ خود جب یہ فیصلہ کر چکا کہ میں وہ شخص نہیں ہوں گا جو …….. ”کیا یہ تم ہو؟” سوال کا جواب ”ہاں” میں دے گا تو پھر میں نے یہی سوال دوسروں سے پوچھنا شروع کر دیا …….. ”کیا یہ تم ہو؟” اپنی معصومیت میں اکثر و بیشتر کاجواب ”ہاں” ہوتا ہے تب میں اُن پر تھوڑا سا ہنستا ہوں کہ …….. جیسے ”وہ” حقیقتاً ”وہی” ہوتے ہیں۔ اگر آپ کو اس کے متعلق کوئی شک نہیں تو مجھے کچھ شک ضرور ہے کہ کیا …….. ”تم” …….. حقیقتاً …….. ”تم” ہی ہو؟
بشکریہ

(ایک مختصر ڈینش کہانی )کیا یہ تم ہو؟از: وِلّی سؤرنسنترجمہ: نصر ملک ( ڈنمارک)__________________وِلّی سؤرنسن ڈنمار…

Posted by Nasar Malik on Saturday, February 24, 2018

Leave your vote

0 points
Upvote Downvote

Total votes: 0

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

جواب چھوڑیں

Hey there!

Forgot password?

Forgot your password?

Enter your account data and we will send you a link to reset your password.

Your password reset link appears to be invalid or expired.

Close
of

Processing files…

Situs sbobet resmi terpercaya. Daftar situs slot online gacor resmi terbaik. Agen situs judi bola resmi terpercaya. Situs idn poker online resmi. Agen situs idn poker online resmi terpercaya. Situs idn poker terpercaya.

situs idn poker terbesar di Indonesia.

List website idn poker terbaik.

Situs slot terbaru terpercaya

slot hoki terpercaya

Bergabung di Probola situs judi bola terbesar dengan pasaran terlengkap bergabunglah bersama juarabola situs judi bola resmi dan terpercaya hanya di idn poker terpercaya 2022 daftar sekarng di agen situs slot online paling baik se indonesia
trading binomo bersama https://binomologin.co.id/ daftar dan login di web asli binomo