جہاں گرد کی واپسی – – – ایک مطالعہ تجزیہ نگار: سد…

[ad_1] جہاں گرد کی واپسی – – – ایک مطالعہ
تجزیہ نگار: سدرہ افضل

* * * * * * *

اوڈیسی جسے محمد سلیم الرحمن نے بصورت ناول جہان گرد کی واپسی کے عنوان سے ترجمہ کیا ہے ہومر کی رزمیہ نظم ہے جس کے پس منظر میں تروئے کی دس سالہ جنگ ہے جسے ہومر نے ایلیڈ۔کے نام سے 550 قبل مسیح میں نظم کیا ۔ ۔
ہومر کون تھا ؟
خود اہل یونان کے پاس بھی ہومر کے بارے میں معلومات نہ ہونے کے برابر ہی ہیں۔ یہ ابھی تک طے ہی نہیں ہوپایا ہے کہ ہومر نام کا کوئی کوی، کوئی شاعر تھا بھی یا نہیں، یا یہ محض افسانوی باتیں ہیں۔ ہومر کے نام کی طرح اس کے بارے میں باتیں بھی تاریکی میں کچھ کھوجنے کے مترادف ہیں۔ اس کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ وہ اندھا تھا۔ ’’ہومروس‘‘ کے معنی اندھے کے ہی ہیں۔ یونانی زبان و ادب میں غالباً ہومر کی 7 کے قریب سوانح ملتی ہیں جو شاید اس وقت لکھی گئی ہوں گی جب عوام ہی نہیں خود کہانیاں کہنے، سننے اور لکھنے والوں سے بھی واقف تھے۔ اگر ہومر کے بارے میں تحقیق جامع انداز سے کی جائے اور شوق مطالعہ کی وسعت کو بے لگام چھوڑ دیا جائے تو ہومر کے بارے میں بڑی، ابہامی غیر منطقانہ باتیں کی جاتی ہیں۔ کہا یہ جاتا ہے کہ ہومر حضرت مسیحؑ سے تقریباً آٹھ سو سال پہلے پیدا ہوا،
ہومر کی پیدائش کے مقامات بھی تین بتائے جاتے ہیں
اایونیا
بیبیلونیا
اتھاکا
اوڈیسی میں نظم کے ہیرو اوڈیسیوس کا وطن بھی اتھاکا بتایا گیا ہے ۔ ہومر کی کئ سوانح ہیں ہومر کو خاتون بھی کہا گیا ہے الغرض بہت سے قصے ہیں ۔ ۔ ۔ ۔ بات کو آگے بڑھاتے ہوئے ایلڈ اور اوڈیسی پر بات کرتے ھیں
اوڈیسی رزمیہ داستان ہیرو اوڈیسیوس کی ٩ سالہ وطن واپسی کی جدو جہد ہے ایلڈ میں ایک مقام تروئے کا ذکر ہے جسکی کی جنگ یونان کی خوبصورت ترین خاتون گاڈ آف گاڈ۔ز زیوس کی بیٹی ہیلن کیلئے ہوئ تھی
ہیلن زیوس کی بیٹی تھی ۔ ۔ ۔ اس کی شادی کا وقت آیا تو سوءمور کی رسم ہوئ جس میں ریاستوں کے شہزادے خواستگاری کیلئے آئے اور ان میں جنگ چھڑ گئ ۔ ۔ ۔ یہاں اوڈیسیوس پہلی بار اپنی ذہانت کیساتھ نمودار ہوتا ہے ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ اور مشورہ دیتا ہے کہ ہیلن کی شادی جس سے کی جائے باقی خواستگار ناصرف اسکے حق میں دستبردار ہوں گے بلکہ اگر کوئ اس پر مصیبت آئ تو ملکر مدد بھی کریں گے ۔ ۔ ۔ ۔
ایلڈ کی کہانی اسی پسمنظر میں ابھرتی ہے جب ایکیلیس جو تروئے کا شہزادہ ہے ہیلن کو سپارٹا سے اغوا کر کے تروئے لے جاتا ہے اور یہ تمام شہزادے اور اوڈیسیوس ملکر ہیلن کو بچانے کی خاطر تروئے پر حملہ کرتے ہیں ۔ ۔ ۔ دس سال تک جنگچلتی ہے اور پھر اوڈیسیوس کی ذہانت مکاری اور دیوتا ہوڈس کی مدد سے ایکلیس مارا جاتا ہے اور تروئے فتح ہو جاتا ہے
۔ ۔ ۔ ۔۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔
اوڈیسی 19سال کے تیلماخوس سے شروع ہوتی ہے جو اوڈیسیوس کا بیٹا ہے اور اپنے باپ کو ڈھونڈنا چاہتا ہے اور اس ضمن میں فہم و ذکا کی دیوی ایتھینا اس کی مددگار ہے ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ اوڈیسیوس تروئے سے واپسی پر سمندری طوفان کا شکار ہو کر غائب ہو جاتا ہے اور 9 سال سے اتھاکا یعنی اپنے وطن واپسی کی راہ تلاش کرتا ہے ۔ ۔ ۔ ۔ جہاں وہ مختلف مصائب کا شکار ہوتا ہے مگر ہمت و حوصلہ نہیں ہارتا ۔ ۔ ۔ ۔ ۔
کہانی کے دو حصے ہیں ایکطرف تیلماخوس کی تلاش و جستجو اور سفر ہے ۔ ۔ ۔ ۔ دوسری طرف اوڈیسیوس کی تلاش و جستجو ہے ۔ ۔ ۔ آخر ان دونوں کی تلاش ختم ہوتی ہے ۔ ۔ ۔ اور نظم ایک اور شروعات کے ساتھ اختتام کو پہنچتیی ہے
میرے نزدیک ہومر اپنے فن میں نابغہ روزگار ہے ۔ ۔ ۔جسطرح وہ کہانی کو درمیان سے شروع کرتے ہوئے in the middle of things کی تکنیک پر چلتا ہے اور فلیش بیک کے ذریعے اسے جوڑتا اور آگے بڑھاتا ہے کمال ہے اور اس کی بدولت کہانی کی اہمیت کہیں زیادہ بڑھ گئ ہے ۔ ۔ ۔ پھر اس کے ہاں مونتاج کی ٹکنیک اہم ہے جسکے ذریعے کردار قاری پر کھلتے ہیں ۔۔ ۔ ۔ ۔ ۔ اور حیران کن بہ کہ none liner پلاٹ ہونے کے باوجود کہانی ایک نکتے سے شروع ہو کر دوسرے پر ختم ہوتی ہے ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ یہ ایک بہترین رز میہ ہے جس کا آغاز وسط اور اختتام ہے رزمیہ کی چار اقسام ہیں
1* سادہ رزمیہ
2*پیچیدہ رز میہ
3* اخلاقی رزمیہ
4* المناک رزمیہ
اوڈیسی پیچیدہ اور اخلاقی رزمیہ ہے ۔ ۔ ۔ ۔ رزمیہ کیلئے ضروری ہے کہ شاعر اس میں خود نظر نہ آئے اور واقعات کو بیان کرے اور ہومر اس اعتبار سے کامیاب ہے
اوڈیسی کے موضوعات
تجسس
کوشش
توضع
دیوتاؤں کی مدد۔
بھیس بدلنا
تلاش
جلا وطنی
ہجرت
کتھارسس
اور محبت ہیں
اس کی ایک اہم خصوصیت اس کی ٹکنیک ہے جی کے تحت اوڈیسی میں جو علامتیں ابھر کر سامنے آتی ہیں وہ ادب میں لازوال ہوگئ ہیں مثال کے طور پر
خود اوڈیسی ۔ ۔ ۔ جو life long quest کیلئے علامت بن گئ
ٹروجن ہارس چال بازی کی
اتھاکا منزل مقصود کی
اکیلیس ہیل کمزوری کی ایڑی پر وار کرنے کی
تو دیکھا جائے تو یہ بات بھی خوب ہے کہ یونان کے تین بڑے ڈرامہ نگار
سوفوکلیس
یوریکلیس
اور ارسٹوکریس
بعد تک اس سے متاثر نظر آتے ہیں۔
’ایلیڈ‘ اور ’اوڈیسی‘ کا کوئی مخصوص سیاسی اور سماجی پس منظر نہیں ہے۔ دو رزمیوں کی صورت لکھے گئے اِس منظوم قصے میں ۸۰۰ تا ۱۰۰۰ قبل مسیح کے یونانی مطلق العنان بادشاہوں کے اہلِ ٹرائے پر غلبہ پانے کے بعد واپسی کا سفر بیان کیا گیا ہے۔
’ایلیڈ‘ اور ’اوڈیسی‘ کا مرکزی کردار اوڈسیوس غلطی سے سمندر کے دیوتا کے بیٹے کی بینائی زائل کردیتا ہے، جس کے سبب اسے طرح طرح کی مشکلات کا سامناکرنا پڑتا ہے۔ اس منظوم قصے/ رزمیہ میں ہومر نے خصوصیت کے ساتھ جواں ہمت اوڈسیوس کی محبت، دوستی اور وطن پرستی کو اپنا موضوع بنایا ہے۔ جب کہ عالمِ بالا پر دیوتاؤں کو انسانی مقدر کے فیصلے کرتے بھی دکھایا گیا ہے۔
اوڈسیوس سورماؤں کے دور کی یاد تازہ کردیتا ہے۔ انسانی حافظے میں سب سے قدیم یادیں اُسی نیم تاریخی دور (سورماؤں کا دور) سے متعلق محفوظ ہیں، جب انسان نے تاریخ لکھنا شروع نہیں کی تھی۔ اُس وقت انسان اپنی ہی طرح کے (لیکن طاقتور اور باکمال انسانوں کو) ’دیوتا‘ یا ’دیوتاؤں کا اوتار‘ سمجھتا تھا۔ اوڈسیوس مردانہ وجاہت کا پیکر، تدبر کا نمونہ اور تلوار کا دھنی ہونے کے ساتھ ساتھ سیاح اور قصہ گو بھی ہے۔ وہ دیوتاؤں کا تابع فرمان، دوستوں کا دوست، ظالموں کا دشمن، بیوی بچوں سے محبت کرنے والا، وطن پرست انسان ہے۔ ہومر نے اوڈسیوس کے حوالے سے فانی انسان کی جدوجہد اور تہذیبی ورثے کی تلاش کو بنیادی اہمیت دی ہے۔ اس منظوم قصے/ رزمیہ میں ہومر نے سفر کو وسیلۂ ظفر قرار دیا ہے۔ ہومر نے اوڈسیوس کے سفر کا احوال بیان کرتے ہوئے ہمیں اس دنیا کی حقیقتوں سے متعارف کروانے کے ساتھ ساتھ تخیل اور رومان کی دنیاؤں کی سیر بھی کروائی ہے۔ یوں ہم ایک سے زائد تہذیبوں اور رسوم و رواج سے آشنائی حاصل کرتے ہیں۔
مجموعی اعتبار سے اٹیکا کی ملکہ (یعنی اوڈسیوس کی بیوی پینے لوپیا) اور اس کے عُشّاق کے حوالے سے قدیم یونان کی سیاسی اور سماجی رسومات سے واقفیت حاصل کرنے کے ساتھ ساتھ ہمیں عالمِ بالا پر زیوس دیوتا کے دربار کی ’دیوتا کونسل‘ سے متعلق بھی معلومات ہاتھ آتی ہیں، جس سے پتا چلتا ہے کہ دیویاں اور دیوتا کس قدر ضدی، خود سر اور کمزور کردار کے حامل ہیں۔ ’اوڈیسی‘ میں ہومر نے ہمیں سائکون اور سائی کلوپس اقوام کی طرزِ معاشرت کے ساتھ ساتھ راس مالیا، جزیرہ لاموس، سورج دیوتا کے مثلث نما خیالی جزیرے، جزیرہ اوگی گیا اور جزیرہ فیاکیا کے علاوہ پاتال سے متعلق معلومات فراہم کی ہیں۔
اس طرح ہم کہہ سکتے ہیں کہ ہومر نے اُس وقت کی معلومہ دنیا اور دوسرے جہان میں روحوں کی حالت سے متعارف کروانے کے ساتھ جزا اور سزا کے تصور پر بھی خیال آرائی کی ہے۔


بشکریہ

جہاں گرد کی واپسی – – – ایک مطالعہ تجزیہ نگار: سدرہ افضل * * * * * * *اوڈیسی جسے محمد سلیم الرحمن نے بصورت ناول جہا…

Posted by Yasir Habib on Monday, February 5, 2018

Leave your vote

0 points
Upvote Downvote

Total votes: 0

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

جواب چھوڑیں

Hey there!

Forgot password?

Forgot your password?

Enter your account data and we will send you a link to reset your password.

Your password reset link appears to be invalid or expired.

Close
of

Processing files…

Situs sbobet resmi terpercaya. Daftar situs slot online gacor resmi terbaik. Agen situs judi bola resmi terpercaya. Situs idn poker online resmi. Agen situs idn poker online resmi terpercaya. Situs idn poker terpercaya.

situs idn poker terbesar di Indonesia.

List website idn poker terbaik.

Situs slot terbaru terpercaya

Bergabung di Probola situs judi bola terbesar dengan pasaran terlengkap bergabunglah bersama juarabola situs judi bola resmi dan terpercaya hanya di idn poker terpercaya 2022 daftar sekarng di agen situs slot online paling baik se indonesia
trading binomo bersama https://binomologin.co.id/ daftar dan login di web asli binomo