پشتو سے ترجمہ کافَر کا بچہ (تاج رحیم) گاؤں کے بڑ…

[ad_1] پشتو سے ترجمہ
کافَر کا بچہ
(تاج رحیم)

گاؤں کے بڑے مولانا صاحب نے اس پر کفر کا فتوا لگا دیا ۔ ورنہ وہ تو اچھا خاصا شریف اور بے ضرر انسان تھا بس ذرا فلسفی ٹائپ تھا ۔ اور اس ٹائپ کے سب ہی کریک تو ہوتے ہی ہیں۔ کریک ہونا کوئی ایسا بڑا گناہ بھی نہیں ۔ پھر بڑے مولوی صاحب نے اس کے خلاف تھانے میں ایف آئی آر درج کروانے کی کوشش کی ۔ مگر بڑے تھانیدار صاحب سمجھ دار آدمی تھے ۔ وہ جانتے تھے کہ گلبدین دماغی طور پر نارمل نہیں ہے۔ اور گاؤں کے سب ہی لوگ اس حقیقت سے واقف تھے۔ اور گلبدین سے ہمدردی رکھتے تھے سوائے مولاناصاحب اور ان کے شاگردوں کے۔
پہلے تو گلبدین نے خدا سے کشتی لڑنے کیلئے گاؤں کے میلہ گراؤنڈ کو منتخب کیا تھا ۔ لیکن بڑے تھانیدار صاحب نے اس کے تحفظ کو مد نظر رکھتے ہوئے تھانے کے سامنے کھیل گراؤنڈ میں اس کھیل کو منعقد کرنے کا فیصلہ کیا اور مولانا صاحب سمیت سب مولویوں کو وہاں آنے کی دعوت دی ۔
سارے علاقے کے لوگوں کیلئے “ گلبدین اور خدا کی کشتی ” ایک دلچسپ کھیل کی صورت اختیار کرگیا ۔ اور مقررہ دن صبح سے لوگ گراؤنڈ میں جمع ہونا شروع ہو گئے ۔ ارد گرد کے دیہاتوں سے خان لوگ اور دوسرے معززین بھی اس کارِ خیر کو دیکھنے کی سعادت حاصل کرنے آگئے ۔ تھانیدار صاحب کو خان صاحبان، اورمعززین کے بیٹھنے کیلئے چارپائیوں کا انتظام کرنا پڑا ۔ اور مولانا صاحب کے بیٹھنےکیلئے مسجد سے ان کا میمبر خصوصی طور پر منگوایا گیا ۔ کیونکہ مولانا صاحب اس کھیل کے مہمان خصوصی تھے اور ماشا اللہ ان کی صحت اور جسامت نہ صرف بھاری بھرکم تھی بلکہ ان کا چلنا پھرنا اور اٹھنا بیٹھنا بھی بھاری بھرکم تھا ۔ عام چارپائی ان کی ہستی کو برداشت کرنے کی اہل نہیں تھی ۔اور گلبدین نے تو چارپائی کیا بلکہ زمین پر بھی بیٹھنے سے یہ کہہ کرانکار کردیا کہ وہ کشتی لڑنے آیا ہے بیٹھنے نہیں ،
وقت گزر رہا تھا ۔ تماشائیوں کا صبر جواب دے رہا تھا ۔ وقفے وقفے بعد گلبدین دونوں ہاتھ اوپر اٹھا کر کہتا ۔ ” اس موٹی توند والے مولوی کے خدا ! اب ڈر کر چھپتے کیوں ہو ۔ یہ اتنے لوگ تیری طاقت دیکھنے جمع ہوے ہیں ان کو مایوس نہ کرو ۔ میدان میں آؤ ” ۔
مولاناصاحب نے اپنی گرجدار آواز میں تمام مجمع کو مخاطب کرکے کہا ۔“ تم سب اپنی آنکھوں سے دیکھ رہے ہو اور کانوں سے سن رہے ہو ۔ یہ کاپَر کا بچہ اللہ جل شان ہو کی شان میں کیا بکواس کررہا ہے۔یہ پاگل نہیں ہے۔مردود ہے، کاپَر ہے۔ واجب القتل ہے ” ۔
پہلے تو تمام مجمع پر خاموشی چھاگئی ۔ شاید اس خاموشی سے گلبدین نے فائدہ اٹھایا ۔ اور مولانا صاحب کو چیلنج کرتے ہوے کہا ۔“ تم اس کا اپنا آدمی ہے نا۔ ہم پہلے تم سے کشتی لڑے گا ۔ بعد میں تمہارا خدا آئیگا تو اس کو بھی دیکھ لے گا ۔ تم پہلے تخت سے نیچے اترو ۔ ”
مجمع میں چہ می گوئیاں شروع ہوگئیں۔ جب آواز شور میں بدل گئی تو تھانیدار صاحب نے اپنا سوٹا بلند کرکے لوگوں کو خاموش ہونے کو کہا ۔ او پھر خان صاحبان کو مخاطب کرکے کہا کہ “ آپ لوگ اس علاقے کے لیڈر اور رہنما ہیں ۔ یہ ایک جمہوری ملک ہے ۔ آپ جو فیصلہ کرینگے میں اس پر عمل کرواؤنگا ” ۔
گلبدین میدان کے بیچ میں ایک پہلوان کی طرح چکر لگاتا رہا او ر مولانا صاحب کو بار بار چیلنج کرتا رہا ۔ خان صاحبان پر ذمہ داری آن پڑی تھی ۔ سر جوڑ کر تھوڑی دیر کچھ صلاح مشورہ کرتے رہے ۔ پھر بڑے خان نے کھڑے ہو کر ذرا مسکرا کرکہا“ہمارے جرگے نے مساوات کا فیصلہ کیا ہے ۔ کہ مولانا صاحب اور گلبدین کا دنگل ہو جائے تاکہ لوگ بھی محظوظ ہو سکیں اور ہار جیت کا فیصلہ عوام خود کرلیں ـ ”۔
لوگوں نے دنگل کے حق میں نعرے لگانے شروع کر دئے ۔ تھانیدار صاحب نے مولانا صاحب کے قریب جاکر خوانین کا ٖ فیصلہ سنایا اور ان سے نہایت ادب کے ساتھ عرض کیا کہ وہ میدان میں آجائیں ۔ تاکہ فیصلہ ہو جائے ۔ مولانا صاحب کو پختونو ں سے اس فیصلے کی امید نہیں تھی اور نہ ہی وہ جسمانی طور پر کشتی لڑنے کیلئے فِٹ تھے۔ وہ مرغن غذا کشتی لڑنے کیلئے تو نہیں کھاتے تھے۔ وہ تو زبان اور دماغی قوت کیلئے کھاتے تھے ۔دماغی قوت تو ماشا اللہ ان کے پاس بہت تھی ۔ پلان کرنے، جواب سوچنے اور جواب دینے میں ان کو دیر نہیں لگی۔ فوراََ کہا“ ایس پی صاحب ۔ یہ جمہوری ملک ضرور ہے مگر اسلامی ملک بھی ہے ۔ ہم اسلامی طریقے پر سوچ کر اپنا فیصلہ دینگے ”۔
۔“ وہ کیسے ؟ ” تھانیدار صاحب نے پوچھا
۔“ ہم ابھی اور اسی وقت اپنی مجلسِ شورا کو بلا کر ، اور مشورہ کرکے آپ کو فیصلہ دے دینگے ”۔
۔“ ضرور ضرور ” ۔ تھانیدار صاحب نے ان سے کہا۔
وہیں بیٹھے بیٹھے مولانا صاحب نے دس بارہ با ریش افراد کو جو سفید عمامے پہنے ہوے تھے بلا کر اپنے گرد جمع کیا اور کچھ دیر تک سب آپس میں سر جوڑ کر چہ می گویاں کرتے رہے ۔ پھر تھانیدار صاحب کو بلا کر مجلسِ شورا کا فیصلہ سنایا ۔
۔ـ“ ہماری مجلسِ شورا متفقہ طور پر اس نتیجے پر پہنچی ہے کہ یہ گلبدین ،کاپر کا بچہ واقعی پاگل ہے ۔ اس کو اپنا کوئی ہوش نہیں ـ تو خدا کا ہوش کدھر سے آئیگا ۔ ہم اس کے خلاف ایف آئی آر درج کرانے کا فیصلہ واپس لیتے ہیں اور اس کاپَر کے بچے پر اپنا فتوا بھی واپس لیتے ہیں ۔ اور آگے بھی اس سے کوئی تغرض نہیں کرینگے ”۔ لوگ یہ سن کر تالیاں بجانے اور گلبدین زندہ باد کے نعرے لگانے لگے ۔ گلبدین کو کوئی نہیں سن رہا تھا کہ وہ چیخ چیخ کر کہہ رہا تھا “ ہم کوئی شورا ورا نہیں مانتا ۔ پہلے مولوی صاب سے کشتی لڑیگا پھر اس کے خدا سے لڑیگا ۔کسی کو بھاگنے نہیں دیگا”۔
وہ غصے میں ہاتھ اٹھا اٹھا کر کہہ رہا تھا کہ اتنے میں ایک چیل اڑتی اوپرسے گزری اس کے پنجوں میں ایک موٹی ہڈی تھی جو پنجوں سے چھوٹ گئی اور سیدھی گلبدین کے سر پر آ کر اتنے زور سے لگی کہ بیچارہ بیہوش ہوکر گر پڑا لوگوں نے فٹا فٹ اٹھایا اور تھانے کے ساتھ ہی سرکاری کلینک میں لے گئے ۔ مرہم پٹی کی ۔ جب ہوش میں آیا تو لوگوں سے پوچھا ۔“ خدا آیا تھا ۔ کشتی ہو گئی ؟ ”
اسے چیل اور ہڈی کی بات بتائی گئی تو کہنے لگا ۔
۔“ مجھ کو پہلے پتہ تھا ۔ وہ خود نہیں آئیگا ۔ چیل بھیج کر مجھ کو ٹرخا دیگا ”۔
******
بشکریہ

پشتو سے ترجمہکافَر کا بچہ(تاج رحیم) گاؤں کے بڑے مولانا صاحب نے اس پر کفر کا فتوا لگا دیا ۔ ورنہ وہ تو اچھا خاصا شری…

Posted by ‎سخن شناس‎ on Saturday, January 27, 2018

Leave your vote

0 points
Upvote Downvote

Total votes: 0

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

جواب چھوڑیں

Hey there!

Forgot password?

Forgot your password?

Enter your account data and we will send you a link to reset your password.

Your password reset link appears to be invalid or expired.

Close
of

Processing files…

Situs sbobet resmi terpercaya. Daftar situs slot online gacor resmi terbaik. Agen situs judi bola resmi terpercaya. Situs idn poker online resmi. Agen situs idn poker online resmi terpercaya. Situs idn poker terpercaya.

situs idn poker terbesar di Indonesia.

List website idn poker terbaik.

Situs slot terbaru terpercaya

Bergabung di Probola situs judi bola terbesar dengan pasaran terlengkap bergabunglah bersama juarabola situs judi bola resmi dan terpercaya hanya di idn poker terpercaya 2022 daftar sekarng di agen situs slot online paling baik se indonesia
trading binomo bersama https://binomologin.co.id/ daftar dan login di web asli binomo