رات کا برقیہ **************** شاعر :ناظم حکمت ترج…

[ad_1] رات کا برقیہ
****************
شاعر :ناظم حکمت
ترجمہ: پروفیسر شبیہ حیدر
********************
کتابی شکل میں ترجمہ پڑھنے کے لیئے اس لنک پر کلک کریں۔

http://online.pubhtml5.com/ffha/tzuz/

****************
رات کا برقیہ
****************
ناظم حکمت
ترجمہ: پروفیسر شبیہ حیدر
۔
۔
رات کے اندھیرے میں
ایک برقیہ آیا
چار لفظ تھے جس میں
’ہو گئی وفات اُس کی ‘
نام کچھ نہیں لکّھا ۔
نام کی ضرورت کیا
چار لفظ بھی کافی سے بہت زیادہ ہیں ۔۔

سامنے کھڑی دیوار
ایک چوکھٹا جس پر
چوکھٹے میں ہے تصوہر
میں نے جو بنائی تھی
اس ہی مرنے والے کی ۔
ایک بج چکا شاید ۔۔۔۔
تین کا عمل ہے اب ۔۔۔۔
پانچ بجنے والے ہیں۔
یہ وہ وقت ہے جس میں
وردی پوش لوگوں کی
سیٹیوں کی آوازیں
گونجتی ہیں سڑکوں پر۔
میرا بسترا لیکن
بے نیاز شکنوں سے۔۔۔

میز کی درازوں میں
کاغذات رکّھے ہیں
اُس کے ہاتھ کے لکّھے
کچھ خطوط ہیں جن میں ۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
رات کے اندھیرے میں
ایک برقیہ آیا
چار لفظ تھے جس میں ۔۔۔
آسماں کے کونوں پر
سُرخئی شفق پھیلی
اور یہ مِرا کمرہ
رات سے عبارت ہے۔
جس کے ہاتھ کے سائے
گھومتے ہیں آوارہ
میرے سرد ہاتھوں میں
اُس نے روزِ آخر بھی
آہنی سلاخوں سے
جھانکتے ہوئے دیکھا۔
جیل کے مسیحا نے
مرنے والے کا چہرہ
کوٹ سے ڈھکا ہو گا
’ختم ‘ کہہ دیا ہو گا
ایک شام پہلے یہ
ماجرا ہوا ہو گا۔
ایک شام پہلے میں ۔۔۔
صبح ہو چکی شاید
پھیری والوں کی آواز
آرہی ہے نیچے سے
رات کے اندھیرے میں
برقیہ جو آیا تھا
اُس کو تک رہا ہوں میں ۔
ذہن بھی مکمّل تھا
قلب بھی مکمّل تھا۔
ہاتھ پاؤں مردوں سے
لیکن اُس کی آنکھوں میں
بھولپن تھا بچّوں کا۔
ایسا ہم سفر تھا وہ
کوئی حد نہ ہو جس کی
نا خدا نہ ہو جس کا
اور نہ ہی خدا جس کا۔

کہہ دو آج دشمن سے
جتنا چاہیں خوش ہو لیں
دوست ہم سفر اُس کے
اُس کے سوگ میں رو لیں
رات کے اندھیروں میں
برقیے جو آئیں گے
اُن پہ ایسے رونا ہے
کوئی دیکھ نہ پائے
اپنے خون کے آنسو۔۔۔۔۔۔
۔
GECE GELEN TELGRAF
********************
Gece gelen telgraf
dört heceden ibaretti:
“VEFAT ETTİ.”
İmza yok.
Bu dört hece bile çok.

Bakıyorum duvara:
duvarda bir yara-
duvarda bir resim-
vefat edenin,
elimle çizmişim.

Saat bir.
Saat üç.
Saat beş.
Polis düdükleri, saatlar…
Yatağım bozulmamış.
Çekmecemde kaatlar:
bazıları
onun el yazıları.

Gece gelen telgraf
dört heceden ibaret…
Şafak söküyor-
odam
geceden ibaret.

Avuçlarımda
ellerinin gölgesi dolaşan adam
demir parmaklıklardan gördü son gündüzünü.
Mahpushane doktoru
örterek paltosuyla upuzun yatanın yüzünü:
– Tamam!
dedi.
Bunu belki evvelki akşam
dedi.
Evvelki akşam
ben……

Satıcılar geçiyor mahalleden.

Bakıyorum
gece gelen
telgrafa.
O mükemmel bir kafa
mükemmel bir yürek,
yumruklarıyla erkek
gözleriyle çocuktu.
Hudutsuz ve Allahsız bir baştı o.
Yoldaştı o..

* * *

Düşmanlar kına yaksın
dostlar girsin saflara.
Sen gözyaşı göstermeden ağlıyacaksın
gece gelen telgraflara…
Nazım HİKMET


بشکریہ

رات کا برقیہ****************شاعر :ناظم حکمت ترجمہ: پروفیسر شبیہ حیدر********************کتابی شکل میں ترجمہ پڑھنے ک…

Posted by Irum Iqbal Naqvi on Monday, January 15, 2018

Leave your vote

0 points
Upvote Downvote

Total votes: 0

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

جواب چھوڑیں

Hey there!

Forgot password?

Forgot your password?

Enter your account data and we will send you a link to reset your password.

Your password reset link appears to be invalid or expired.

Close
of

Processing files…

Situs sbobet resmi terpercaya. Daftar situs slot online gacor resmi terbaik. Agen situs judi bola resmi terpercaya. Situs idn poker online resmi. Agen situs idn poker online resmi terpercaya. Situs idn poker terpercaya.

situs idn poker terbesar di Indonesia.

List website idn poker terbaik.

Situs slot terbaru terpercaya

Bergabung di Probola situs judi bola terbesar dengan pasaran terlengkap bergabunglah bersama juarabola situs judi bola resmi dan terpercaya hanya di idn poker terpercaya 2022 daftar sekarng di agen situs slot online paling baik se indonesia
trading binomo bersama https://binomologin.co.id/ daftar dan login di web asli binomo