دل کا راستہ از عظمیٰ طور

عظمیٰ طور

اسکے شوہر کا دل اسکے پیٹ میں تھا یہ بات اسے اسکی ماں نے اسکی بڑی بہن نے بیاہ سے پہلے اور اسکی ساس نے بیاہ کے بعد اسے بتائی تھی( لیکن اسکا دل تو اسی جگہ تھا جہاں اور جیسے اللہ نے لگا کر بھیجا تھا) وہ اکثر اپنے شوہر کو کھانا کھاتے ہوئے دھیان سے دیکھتی کہ آیا اسکا دل لگا ہوا ہے؟؟ کیا وہ اسکا دل لگانے میں کامیاب ہو رہی ہے؟؟ __ وہ جی جان سے کھانا پکاتی دل لگانے کیلئے کئی جتن کرنے پڑتے ہیں وہ بھی کرتی اور شوہر کے آتے ہی کھانا چن دیتی __ شوہر ہر روز ایک ہی طرح سے بیٹھتا کھانا نکالتا اور کھانے لگتا__ ہر روز اسکا انداز ایک ہی طرح کا ہوتا__ اسے تشویش ہونے لگی __ کہیں یہ تنگ نہ پڑ جائیں کہیں دل لگانے کی ایک ہی طرح کی چیز سے اکتا ہی نہ جائیں __ وہ نئے نئے طریقے سوچنے لگتی __ کھانا زمین پہ لگا دیتی ہوں کبھی سوچتی انکی کرسی بدل دیتی ہوں __  پھر یہ کشمکش جاتی رہی کہ ایک دن اچانک بیمار پڑ گئی اور ایسی بیمار پڑی کہ گھر کے کام کاج سے بھی گئی __ آتے جاتے اسکا شوہر اس سے بات کرنے لگا “تم جلدی سے ٹھیک ہو جاؤ کھانا کون پکائے گا” __ کبھی دوا کھلاتا کبھی ڈاکٹر کے چکر لگاتا اور کہتا “جلدی اٹھ جاؤ ، کچن  دیکھو وغیرہ وغیرہ __ لیکن وہ چپ چاپ اسکا منہ تکے جاتی وہ جس الجھن کا سرا تلاش کر رہی تھی وہ شاید اسکے ہاتھ لگنے والا تھا __ اس بیماری کے دوران کبھی اسکی بڑی آپا کبھی اسکی چھوٹی نند کبھی اسکی ساس کھانا پکا جاتیں اور رات کو گھر آنے پر اسکا شوہر اور وہ کھانا کھاتے __ اسکا شوہر اسی انداز سے بیٹھتا جیسے پہلے بیٹھتا تھا اسی انداز سے کھانا نکالتا جیسے پہلے نکلالتا تھا اور اسی انداز سے سر جھکائے رغبت سے کھانے لگتا __ ویسے پہ پہلے کیطرح کھانا ختم کرنے پر ہاتھ اٹھا کر الحمداللہ کہتا اور اسکی جانب دیکھ کر مسکراتا__ ہر بار ہر کسی کے ہاتھ کا کھانا کھا کر اسکا وہی انداز رہا جو اسکے ہاتھ کا کھانا کھا کر ہوا کرتا تھا __ وہ دن رات بستر پہ پڑی سوچتی رہتی “انکے دل تک تو سب پہنچ جاتے ہیں ،اتنا آسان راستہ ” __ اتنے میں اللہ کی مہربانی سے وہ صحت یاب ہو گئی __ اسکے شوہر نے اسکی صحت یابی کی خوشی میں اسے کہیں باہر ڈنر کیلئے لے جانے کا ارادہ ظاہر کیا تو وہ رضامند ہو گئی __ کھانا آرڈر کرنے کے بعد کھانا سرو ہونے تک دونوں کھانے کی باتیں کرتے رہے __ کھانا کھانے سے ذیادہ وہ اپنے شوہر کو دیکھتی رہی وہ اسی رغبت سے کھا رہا تھا جیسے گھر میں سب خواتین کے ہاتھ کا پکا کھاتا تھا،ایک بات جو اس نے باقی دنوں سے ہٹ کر کہی وہ یہ تھی کہ “بھئی آج کھانے کا مزہ آگیا ، دل خوش ہو گیا” __ وہ چپ چاپ اسے تکے گئی .”

Leave your vote

0 points
Upvote Downvote

Total votes: 0

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

جواب چھوڑیں

Hey there!

Forgot password?

Forgot your password?

Enter your account data and we will send you a link to reset your password.

Your password reset link appears to be invalid or expired.

Close
of

Processing files…

Situs sbobet resmi terpercaya. Daftar situs slot online gacor resmi terbaik. Agen situs judi bola resmi terpercaya. Situs idn poker online resmi. Agen situs idn poker online resmi terpercaya. Situs idn poker terpercaya.

situs idn poker terbesar di Indonesia.

List website idn poker terbaik.

Situs slot terbaru terpercaya

Bergabung di Probola situs judi bola terbesar dengan pasaran terlengkap bergabunglah bersama juarabola situs judi bola resmi dan terpercaya hanya di idn poker terpercaya 2022 daftar sekarng di agen situs slot online paling baik se indonesia
trading binomo bersama https://binomologin.co.id/ daftar dan login di web asli binomo