سانحہ چار سدہ : ڈاکٹر عمرانہ مشتاق

سانحہ چارسدہ کے منصوبہ ساز ذہن افغانستان میں موجود ہیں اور کارروائی کرنے والوں کو وہیں سے ہی کنٹرول کیا جا رہا ہے۔ باچا خان یونیورسٹی پر حملہ افغان خفیہ ایجنسی کے سابق چیف نے بھارتی قونصلیٹ کے ایماء پر کیا ہے۔ اس کے سارے ڈانڈے پٹھان کوٹ کے حادثے سے ملائے جا رہے ہیں۔ یہ خبریں آج کل ہمارے اخبارات کی شہ سرخیاں بن رہی ہیں، ادارئیے لکھے جا رہے ہیں۔ بیان باز حضرات مذمتی قراردادیں پیش کر رہے ہیں۔ اس واقعے پر جتنی بھی مذمت کی جائے کم ہے۔ اصل بات کی طرف کوئی بھی توجہ مبذول کرانے کی جسارت نہیں کرتا کہ اس حادثے کے ذمہ دار کون ہیں؟ اگر اس حادثے کے ذمہ دارہمارے ہمسائے ماں جائے ہیں تو ان سے بازپرس کون کرے گا؟ اس سانحہ کو کسی بہت بڑے حادثے سے مزید دوچار نہیں ہونا چاہیے۔ میں کبھی کبھی سوچتی ہوں کہ ان معصوم طلباء و طالبات کا قصور کیا ہے جن کو خون میں نہلایا جا رہا ہے۔ کیا ان واقعات کے پس منظر میں یہ سازشیں مزید تیار ہو رہی ہیں۔ وہ ایسے محسوس ہوتا ہے کہ اقتصادی راہداری سے استفادہ کرنے والے علاقوں میں دہشت گردوں نے مذموم حرکات شروع کر رکھی ہیں۔ وہ پاکستان کو ایک خوشحال ریاست کے طور پر نہیں دیکھ سکتے۔ وزیراعظم پاکستان میاں نواز شریف نے دوٹوک الفاظ میں یہ تو کہہ دیا ہے کہ پاکستان میں دہشت گردوں کے ٹھکانے ختم کر دیئے گئے ہیں مگر پھر ایسی وارداتوں کا اعادہ کیوں ہو رہا ہے۔ ہمارے فوجی جوانوں نے امن وامان کے حصول کے لیے اپنی جانوں کی قربانیاں دی ہیں۔ پوری قوم انہیں سلیوٹ کرتی ہے۔ جنرل راحیل شریف کا کردار قوم کے دلوں میں مزید احترام پیدا کرتا ہے، کیونکہ انہوں نے وطنِ عزیز کے لیے بڑی بڑی قربانیاں دی ہیں اور سرِ مو اپنے عہد سے بے وفائی نہیں کی ہے۔ اب سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ پاکستانی قوم کے ساتھ جو سلوک ہو رہا ہے ان کی زندگیاں معرضِ خطر میں کیوں ہیں؟ اور چارسدہ کے شہداء کا خون کس کی گردن پر ہے؟ اچھے حکمران اپنی ساکھ کو برقرار رکھتے ہوئے وزارتوں کو چھوڑ دیتے ہیں مگر یہ بات میری سمجھ سے بالاتر ہے کہ کیا اتنے بڑے حادثے پر مرنے والے لواحقین کے ساتھ صرف اشک شوئی، تعزیت اور زخمیوں کی عیادت ہی کافی ہے۔ حکمرانوں کے لیے یہ وقت بہت بڑی آزمائش کا ہے۔ ہندوستان میں جو واقعہ پٹھان کوٹ میں رونما ہوا، ہم تو اس کی بھی مذمت کرتے ہیں۔
جس طرح بتیس دانت زبان کی حفاظت کرتے ہیں حکمرانوں کو بھی اپنے عوام کی اسی طرح حفاظت کرنی چاہیے۔ زبان وہ انسانی جزو ہے جو نازک ترین ہے اور ہڈی کے بغیر ہے، مگر اس کا غلط استعمال بڑے بڑوں کی ہڈیاں تڑوا دیتا ہے۔ دلوں میں منافقت رکھ کر دوستانہ ظاہر کرنا حقائق پر پردہ ڈالنے کے مترادف ہے۔ حکمرانوں کو ملک کی خاطر اپنے مفادات قربان کر دینے چاہئیں۔ نظریاتی سرحدوں کی حفاظت اسی طرح ضروری ہے جس طرح جغرافیائی سرحدوں کے محافظ اپنی راتوں کی نیندیں قربان کرکے ہمارے لیے میٹھی نیند کا اہتمام کرتے ہیں۔ نظریاتی اور جغرافیائی سرحدوں کا تحفظ حکمرانوں کا جزو ایمان ہونا چاہیے۔ آرمی سکول پشاور کے شہداء کے غم و اندوہ میں ڈوبی ہوئی قوم ابھی اس صدمے سے باہر نہ آئی تھی کہ برق تپساں کا رقص فضائے چمن میں دیکھا جا رہا ہے، جو نیک شگون نہیں ہے، بہت بڑی بدشگونی ہے یہ۔ ہمارے آرمی چیف جنرل راحیل شریف نے افغان حکمرانوں کو بتا دیا ہے کہ سانحہ چارسدہ کے منصوبہ ساز ذہنوں کی کارستانی کے ڈانڈے افغانستان سے مل رہے ہیں۔ وزیراعظم نواز شریف سے مشاورت کے بعد جنرل راحیل شریف کا اشرف غنی، عبداللہ اور جنرل کیمبل سے فون پر رابطہ بہت اچھی بات ہے۔ 2016ء کا سال خوشحال پاکستان کی خوشخبریوں کی نوید لے کر آیا تھا، مگر پہلے مہینے میں ہی اتنے سارے زخم لگ گئے کہ جس میں صنعتی پہیہ بھی جام کرنے کی سازش گڈو پاور سٹیشن کے ٹرانسفارمر میں آتشزدگی اس ماہ میں یہ دوسرا بڑا بریک ڈائون ہے۔ دہشت گردوں کو مکمل طور پر ختم کیے بغیر پاک چائنہ راہداری سے بھی ہم پوری طرح مستفید نہیں ہو سکتے۔ یہ بات بڑی خوشگوار اور نیک شگون ہے کہ ملک میں دہشت گردوں کے ٹھکانے مکمل طور پر ختم کر دیئے گئے ہیں اور دہشت گردوں نے ہمسایہ ملکوں میں پناہ لے رکھی ہے، اور اکا دکا جو واقعات ہو رہے ہیں اس میں بیرونی سماج دشمن عناصر کا ہاتھ ہے۔ ہمارے ملک کو ٹھوس اور مضبوط دفاعی حکمت عملی کی ضرورت ہے، جس پر حکمرانوں کو سوچنا چاہیے۔ دہشت گردی کے حوالے سے ایک نظم کے چند اشعار قارئین کی نذر کرتی ہوں۔
شہروں کو خونریز بنائے دہشت گردی
جنگل کا قانون چلائے دہشت گردی
ملک و ملت اور مذہب کے نام پہ ہے یہ
کیسے کیسے روپ دکھائے دہشت گردی
ننھے بچے بھی اس سے محفوظ نہیں ہیں
ہائے ان کی نعشیں، ہائے دہشت گردی
یوں لگتا ہے جیسے جنگل میں رہتے ہیں
ہر سو کیسا ڈر پھیلائے دہشت گردی
میں تو ماں ہوں اور بھی سہمی سہمی سی
عمرانہؔ دل کو دہلائے دہشت گردی

Leave your vote

0 points
Upvote Downvote

Total votes: 0

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

جواب چھوڑیں

Hey there!

Forgot password?

Forgot your password?

Enter your account data and we will send you a link to reset your password.

Your password reset link appears to be invalid or expired.

Close
of

Processing files…

Situs sbobet resmi terpercaya. Daftar situs slot online gacor resmi terbaik. Agen situs judi bola resmi terpercaya. Situs idn poker online resmi. Agen situs idn poker online resmi terpercaya. Situs idn poker terpercaya.

situs idn poker terbesar di Indonesia.

List website idn poker terbaik.

Situs slot terbaru terpercaya

slot hoki terpercaya

Bergabung di Probola situs judi bola terbesar dengan pasaran terlengkap bergabunglah bersama juarabola situs judi bola resmi dan terpercaya hanya di idn poker terpercaya 2022 daftar sekarng di agen situs slot online paling baik se indonesia
trading binomo bersama https://binomologin.co.id/ daftar dan login di web asli binomo