اور تیرے ساتھ شعرکی خوشبو چلی گئی تشنہ بریلوی جوا…

[ad_1] اور تیرے ساتھ شعرکی خوشبو چلی گئی
تشنہ بریلوی
جواں مرگ پروین شاکر کو ہم کیسے بھلاسکتے ہیں ۔ اس کی حادثاتی موت کو اب بیس سال ہوئے ہیں۔ ہم سب کی طرح صبح سویرے وہ دفتر جانے کے لیے نکلی کہ اچانک اس کی چھوٹی سی گاڑی کو ایک ٹرک نے ٹکر ماردی ۔ پروین اور اس کی گاڑی کا ڈرائیور دونوںختم ہوگئے جب کہ قاتل ڈرائیور چھلاوے کی طرح غائب ہوگیا ۔ کہنے والے کہتے ہیں کہ پروین شاکر ، جسے اردو کا کیٹسKEATSکہنا مناسب ہوگا ‘ کو اس لیے ٹکر ماری گئی کہ وہ ایک اہم کسٹم آفیسر بھی تھی اور کچھ ’’ با اثر لوگ‘‘ اسے راستے سے ہٹاناچاہتے تھے ۔ کون جانے !
1952ء میں پیدا ہونے والی پروین ولد شاکر نے اردو شاعری میں ایک نمایاںمقام حاصل کرلیا ہے ۔ ذہین اور خوش شکل طالبہ کے طور پر اس نے تیزی سے آگے بڑھنا شروع کیا ۔ یہ وہ زمانہ تھا جب ہمارے ملک میں ابھی علم و دانش اور شعر وادب کی عزّت و توقیر تھی۔تعلیمی ادارے اور ادبی محافل کا بھرم قائم تھا اور ریڈیو پاکستان بھی زیڈ اے بخاری کی سربراہی میں مینارۂ نور بنا ہوا تھا ۔ اسی ماحول میں پروین نے شاہدہ حسن اور خوش بخت عالیہ( بعد میں شجاعت) وغیرہ کے ساتھ منظر عام پر آنا شروع کیا اور گلشنِ شاعری میں خوشبوؤں نے اس کا استقبال کیا ۔ وہ بہت جلد ریڈیو، ٹی وی اور مشاعروں کے ذریعے ایک مقبول شاعرہ بن گئی ۔ مشاعروں کے سامعین ترنّم پسند کرتے ہیں اور زہرہ نگاہ جیسی شاعرہ کو سر پر بٹھاتے ہیں لیکن پروین ’’تحت‘‘ میں بھی اس انداز سے اپنا کلام سناتی تھی کہ ہر ایک سے داد وصول کرتی ۔
کِس طرح شعر سُناتے ہیں ترنّم کے بغیر
یہ سلیقہ‘ یہ قرینہ سبھی سکھا کر وہ گئی
(تشنہ)
پروین کا تعلیمی کیریر بہت شاندار تھا ۔ اس نے لسانیات اور انگلش لٹریچر میں ایم ۔اے کیا۔ امریکا کی مشہور یونیورسٹی ھارورڈ اورکراچی یونیورسٹی میں تعلیم حاصل کی ۔ حکومت نے اسے تمغۂ حسنِ کارکردگی بھی دیا ۔
پروین شاکر تدریس کے میدان میں بھی کامیاب رہی۔ اردو اورانگلش میں کالم بھی لکھے ۔ CSSکا امتحان پاس کرکے سرکاری افسری بھی کی ۔ جہاں تک شاعری کا تعلق ہے تو اس نے نظمیں بھی لکھیں (آزاد نظم اور نثری نظم بھی) لیکن اس کا سب سے بڑا امتیاز غزل ہے ۔
غزل ایک مختصر نظم ہوتی ہے جو فارسی کے ذریعہ اردو میں آئی اور بیحد مقبول ہوئی۔ غزل کے اشعار میں حسن و عشق کے علاوہ ہر قسم کی انسانی کشمکش، نفسیاتی الجھنوں اور آفاقی موضوعات کو گرفت میں لایا جاسکتا ہے ۔ اچھا غزل نگار زندگی کی ایک نئی جہت دریافت کرتا ہے۔ غزل کے اشعار ہماری روزمرہ گفتگو میں بھی شامل ہوجاتے ہیں۔ غالبؔ‘ اقبالؔ‘ فیضؔ اور فرازؔ کے ساتھ پروین شاکر کو بھی یہ امتیاز حاصل ہوا کہ اس کے بہت سے مصرعے ہر ایک کی زبان پر ہیں مثلاً ’’بات تو سچ ہے مگر بات ہے رسوائی کی‘‘
’’تم ہمارے لیے مرچکی ہو ۔‘‘ یہ ہے وہ بے رحم جملہ جو ہمارے معاشرے میں ’’سر اٹھا کر چلنے والی‘‘ لڑکیوں کو اکثر سننے کو ملتا ہے ۔ بہت ’’رو شن خیال‘‘ والدین بھی ایسی لڑکیوں کو قتل تک کرنے پر آمادہ ہوجاتے ہیں۔ یہ جملہ پروین شاکر نے بھی سُنا مگر اس نے بہادری سے حالات کا مقابلہ کیا اور اپنے بیٹے سیّد مراد علی پر ساری توجّہ مرکوز کردی ۔ شوہر سید نصیر علی سے طلاق لینے کے بعد وہ دوسری شادی کرسکتی تھی ۔ کئی اہم لوگ اس کی طرف راغب ہوئے ۔
لاہور کے ایک ممتاز ٹی وی کمپیئر نے اپنی گلوکارہ بیوی کو طلاق دینے کے بعد پروین کو شاید پروپوز بھی کیا لیکن وہ راضی نہیں ہوئی۔ وہ ہمارے شدت پسند اور تنگ نظر مردانہ معاشرے سے بہت بد دل ہوگئی تھی۔ جب کوئی پروین سے اس کی ’’ازدواجی مشکلات‘‘ کے بارے میں سوال کرتا تو اس کا جواب ہوتا ۔’’ آپ مجھ سے نہ پوچھیں بلکہ پروین قادر آغا سے پوچھیں۔ وہ آپ کو سب کچھ بتا دے گی ۔‘‘ اس کی دوست پروین قادر آغا نے پروین شاکر کی موت کے بعد پروین شاکر ٹرسٹ بھی قائم کیا اور وہ سڑک جہاں اس کی کار کو حادثہ پیش آیا تھا اب ’’پروین شاکر روڈ ‘‘ بن گئی ہے۔
تغزل اور ترنّم سے بھری ہوئی اس کی غزلیں مہدی حسن اور ٹینا ثانی وغیرہ نے اس شان سے پیش کی ہیں کہ ہر ایک نے تعریف کی۔بزرگ شاعر احمد ندیم قاسمی صاحب کو اس نے اپنا ’’عمّو‘‘ بنایا ہوا تھا ۔ فیض صاحب اور احمد فراز بھی اس کو بہت پسند کرتے تھے ۔ پروین شاکر کی بیسویں برسی پر میں نے جو نظم لکھی تھی اس کے دو بند پیش ہیں:
نغموں نے تیرا ساتھ دیا تو جدھر گئی
تجھ سے تو بزمِ شعر کی قسمت سنور گئی
جو بات کی وہ دل میں ہمارے اتر گئی
ہم تشنگانِ شعر کے سب جام بھر گئی
آخر بکھر گئی گلِ صد برگ کی طرح
سورج بلند تھا عَلَمِ مرگ کی طرح
نکہت ترے وجود کی پھیلی ہے کو بہ کو
پاتے ہیں تجھ کو بزمِ تصوّر میں روبرو
چشم و دہن وہی ، وہی انداز ہو بہو
نقشِ خیال اصل سے ملتا ہے مو بہ مو
بہلاؤ دل کو پر وہ سخنور چلی گئی
اور دیکھنے ابد کا سمندر چلی گئی
(تشنہ)
(پروین شاکر کی بیسویں برسی کے موقعے پرخصوصی مضمون)


[ad_2]

Leave your vote

0 points
Upvote Downvote

Total votes: 0

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

جواب چھوڑیں

Hey there!

Forgot password?

Forgot your password?

Enter your account data and we will send you a link to reset your password.

Your password reset link appears to be invalid or expired.

Close
of

Processing files…

Situs sbobet resmi terpercaya. Daftar situs slot online gacor resmi terbaik. Agen situs judi bola resmi terpercaya. Situs idn poker online resmi. Agen situs idn poker online resmi terpercaya. Situs idn poker terpercaya.

situs idn poker terbesar di Indonesia.

List website idn poker terbaik.

Situs slot terbaru terpercaya

slot hoki terpercaya

Bergabung di Probola situs judi bola terbesar dengan pasaran terlengkap bergabunglah bersama juarabola situs judi bola resmi dan terpercaya hanya di idn poker terpercaya 2022 daftar sekarng di agen situs slot online paling baik se indonesia
trading binomo bersama https://binomologin.co.id/ daftar dan login di web asli binomo