میر انیس نے مرثیہ گوئی کو ایک نئی جہت عطا کی ہے اور واقع کربلا کے حوالے سے انیس …

[ad_1] میر انیس نے مرثیہ گوئی کو ایک نئی جہت عطا کی ہے اور واقع کربلا کے حوالے سے انیس کی منظر نگاری کمال کی ہے۔ لیکن اس سے زیادہ مشکل اسے پڑھتے ہوئے اپنے آنسوؤں کو ضبط کرنا۔۔۔
گرد زینب کے تھا ناموس پیمبر کا ہجوم
بانو روتی تھی، کھڑی پیٹتی تھی سر، کلثوم
کہتی تھی دیکھ کے میداں کو سکینہ معصوم
اے پھوپھی! نرغۂ اعدا میں ہیں شاہِ مظلوم
جاؤں گی اب میں ٹھہرنے کی نہیں آپ کے پاس
شمرؔ خنجر لیے جاتا ہے ، مرے باپ کے پاس
باپ کے پاس سے ، جا کر اسے سرکاؤں گی
جوڑ کر ہاتھوں کو منت سے میں سمجھاؤں گی
اپنے بابا کی میں چھاتی سے لپٹ جاؤں گی
خیمے تک ان کو سنبھالے ہوئے لے آؤں گی
بھوکے پیاسے، مرے بابا کو نہ مارے کوئی
ان کے بدلے، مرا سر تن سے اتارے کوئی
کتنا روکا اسے بانو نے پہ ہرگز نہ رکی
چھوٹے سے ہاتھون سے سر پیٹتی میداں کو چلی
پیچھے سر کھولے ہوئے خیمے سے زینبؔ نکلی
پہونچی رن میں تو سکینہؔ یہ شمر سے بولی
او لعیں حیدرِؔ کرار کی پوتی ہوں میں
رحم کر! مجھ پہ کہ بِن باپ کی ہوتی ہوں میں
دیکھ غربت کو مری کر مرے بچپن پہ نظر
باپ مارا گیا میرا تو جیوں گی کیوں کر؟
سر پہ آوے گی یتیمی تو میں جاؤں گی کدھر؟
میں تو ہوں باپ کی شیدا مرا عاشق ہے پدر
باپ بن ایک دم آرام نہ آوے گا مجھے
کون پھر رات کو چھاتی پہ سلاوے گا مجھے
ہنسلیاں اپنی گلے سے تجھے دیتی ہوں اتار
لے مرے کان کا دُر، پر مرے بابا کو نہ مار
ہاتھوں کو جوڑتی ہوں میں ترے آگے ناچار
منع کردے کوئی بیکس کو نہ مارے تلوار
گھر میں جو کچھ زر و زیور ہے، وہ لادوں گی میں
جان بابا کی بچے گی تو دعا دوں گی میں
بھیڑ میں مجھ کو نظر آتے نہیں بابا جاں
اتنا کہہ دے کہ سرک جائیں یہ سب بے ایماں
گرد پھر پھر کے، میں ہوں اپنے پدر کے قرباں
جا کے دیکھوں گی، بدن پر ہیں لگے زخم کہاں
دمِ آخر تو بھلا کام میں آؤں ان کے
اپنے کرتے سے لہو منہ کا چھڑاؤں ان کے

کتنا کہتی رہی وہ بنتِ شۂ عرشِ جناب
اس ستمگر نے دیا کچھ نہ سکینہؔ کو جواب
پیٹ کر سر کہا زینبؔ نے کہ او خانہ خراب
تجھ کو آتا نہیں کچھ روحِ پیمر سے حجاب
ظلم مت کر اسد اللہ کی جائی ہوں میں
ننگے سر پردے سے باہر نکل آئی ہوں میں
میری اماں کا ہے مشہور جہاں میں پردا
بعدِ رحلت بھی جنازہ نہ کسی نے دیکھا
اس کی بیٹی ہوں، ترے ظلم سے ، یہ وقت پڑا
سر برہنہ ہوں، گریباں بھی ہے کرتے کا پھٹا
منہ کو اللہ و پیمبر سے چھپاتا ہے تو
میں تو فریادی ہوں، اور آنکھ چراتا ہے تو
مارا جاتا ہے ترے سامنے زہراؔ کا پسر
دیکھتا ہے تو یہ تلواریں ہیں پڑتی کس پر
تیر کس کو لگے غربال ہوا کس کا جگر
ذبحِ کرنے کو کسے کھینچے ہے ظالم خنجر
دلِ زہرا، جگر شیرِ خدا، کٹتا ہے
ظلم سے تیرے، محمدؔ کا گلا کٹتا ہے
قتل مظلوم کو کیوں کرتا ہے، بے جرم و گناہ
اب تلک میں نے بہت صبر کیا ہے واللہ
دل جلی ہوں میں ابھی سینے سے کھینچوں گر آہ
تو بی جل جائے، تری فوج بھی ہو خاک سیاہ
بد دعا دوں میں تو نازل ابھی آفت ہووے
سر کے بالوں کو جو کھولوں تو قیامت ہووے
غش میں حضرت نے سنے جبکہ یہ زینبؔ کے سخن
کھول کر دیدۂ پرخوں کو اٹھائی گردن
دیکھا سر ننگے کھڑی روتی ہیں مقتل میں بہن
بنتِ زہراؔ کو پکارے یہ شہنشاہِ زمن
کیا کیا تم نے کہ پردے سے کھلے سر نکلیں
جیتے جی میرے سر پردے سے باہر نکلیں
کس کو سمجھاتی ہو، کوئی نہ سنے گا فریاد
باز آئے گا نہیں، قتل سے میرے جلاد
جتنا تم پیٹتی ہو، اور لعیں ہوتے ہیں شاد
حشر کے روز خدا دیوے گا اس خون کی داد
شوق مرنے کا ہے، سر تن سے جدا ہونے دو
جاؤ گھر میں، مجھے امت پہ فدا ہونے دو
گود میں میری سکینہؔ کو اٹھاؤ ہمشیر
کوئی اصغر کی طرح مار نہ بیٹھے اسے تیر
پھر یہ بیٹی کو پکارے ترے صدقے شبیرؔ
تو بھی جا ساتھ پھوپھی جان کے اب اے دلگیر
وقتِ طاعت ہے ذرا یادِ خدا کر لیویں
ہم بھی اب آتے ہیں، سجدے کو ادا کر لیویں
کہہ کے یہ غش ہوئے پھر رن میں شہنشاہ امم
شمرِ اظلم نے رکھا، سینۂ اقدس پہ قدم
جگرِ فاطمہؔ زہرا پہ چلی تیغِ دو دم
آگے زینبؔ کے ہوئے ذبح حسینؔ آہ ستم
پیٹ کر بنت شہنشاہِ زمن رونے لگی
باپ کو بیٹی، برادر کو بہن رونے لگی
فتح کا فوج مخالف میں بجا نقارا
غل ہوا قتل ہوا شیر خدا کا پیارا
بس انیسؔ اب نہیں گویائی کا مجھ کو یارا
غم سے خوں ہو گیا سینہ میں کلیجا سارا
کس سے اس درد و مصیبت کا بیاں ہوتا ہے
آنکھیں روتی ہیں قلم روتا ہے دل روتا ہے
[ad_2]

Leave your vote

-1 points
Upvote Downvote

Total votes: 1

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 1

Downvotes percentage: 100.000000%

جواب چھوڑیں

Hey there!

Forgot password?

Forgot your password?

Enter your account data and we will send you a link to reset your password.

Your password reset link appears to be invalid or expired.

Close
of

Processing files…

Situs sbobet resmi terpercaya. Daftar situs slot online gacor resmi terbaik. Agen situs judi bola resmi terpercaya. Situs idn poker online resmi. Agen situs idn poker online resmi terpercaya. Situs idn poker terpercaya.

situs idn poker terbesar di Indonesia.

List website idn poker terbaik.

Situs slot terbaru terpercaya

slot hoki terpercaya

slot online gacor Situs IDN Poker Terpercaya slot hoki rtp slot gacor slot deposit pulsa
Bergabung di Probola situs judi bola terbesar dengan pasaran terlengkap bergabunglah bersama juarabola situs judi bola resmi dan terpercaya hanya di idn poker terpercaya 2022 daftar sekarng di agen situs slot online paling baik se indonesia
trading binomo bersama https://binomologin.co.id/ daftar dan login di web asli binomo