نا خداۓ سخن تاج الشعرا فصیح العصر منشی و مولوی محم…

[ad_1] نا خداۓ سخن تاج الشعرا فصیح العصر منشی و مولوی محمد نوح صاحب نوحؔ داغؔ دہلوی کے شاگردِ خاص کے چند اشعار آپ احباب کی نذر
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
عشق اُن سے کر کے غم سہنے کے قابل ہو گیا
پہلے دل ہی دل تھا اب دل بن گیا دل ہو گیا
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
عیش کے بدلے ہمیشہ غم مجھے سہنا پڑا
جس طرح قسمت نے رکھا اُس طرح رہنا پڑا
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
یہ حُسن یہ جوانی یہ ناز یہ ادائیں
کیوں تم کو دیکھ کر ہم بے موت مر نہ جائیں
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
اُن کا یہ خوف ہے کہ زباں کھولتے نہیں
میرے رفیق میری طرح بولتے نہیں
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
میرے جینے کو طور کچھ بھی نہیں
سانس چلتی ہے اور کچھ بھی نہیں
زندگی دیکھنے میں سب کچھ ہے
جب سمجھیۓ بغور کچھ بھی نہیں
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
گیا جو وقت تو پھر کر کے غور کیا ہو گا
نہ ہو گا کچھ بھی یہی ہو گا اور کیا ہو گا
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
یہ اگر سچ ہے کہ مجھ کو عشق کرنا آ گیا
تو سجمھ لو روز مرنا روز جینا آ گیا
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
ربط اگر ہو آپس میں تو نہ اذیت پائیں ہم
جائیں ہم بلوائیں وہ آئیں وہ بلوائیں ہم
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
وہ کہتے ہں آؤ مری انجمن میں مگر میں وہاں اب نہیں جانے والا
کہ اکثر بلایا بلا کر بٹھایا بٹھا کر اُٹھایا اُٹھا کر نکالا
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دل کے مٹ جانے کی صورت یوں مصور کھینچ دے
کچھ دبا پہلو رہے بایاں مری تصویر کا
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
گو ساتھ اُٹھا ساتھ چلا ساتھ پھرا میں
سایہ کی طرح پھر بھی رہا اُن سے جدا میں
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
ہم یہ کہتے ہیں کہ ٹھرو رات ابھی گزری نہیں
وہ یہ کہتے ہیں کہ جانے دو سویرا ہو گیا
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
اگر میں پوچھتا ہوں آپ میرے گھر کب آئیں گے
تو وہ کہتے ہیں آئیں گے مگر اس کب سے کیا مطلب
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
اٹھا کے ہاتھ چرا کر نگاہ پھیر کے منہ
عجب ادا سے کسی نے مجھے سلام کیا
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
کھڑے ہیں وہ جھکی جاتی ہیں آنکھیں
اِسی طرزِ حیا نے مار ڈالا
تری سیدھی نظر سے بچ گیا میں
مگر بانکی ادا نے مار ڈالا
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
عدم سے خالی ہاتھ آۓ خالی ہاتھ جائیں گے
فقط اچھے بُرے اعمال اپنے ساتھ جائیں گے
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
کسی کے عشق میں یوں خضر کی تردید کرتا ہوں
جو وہ جینے پہ مرتے ہیں تو میں مرنے پہ مرتا ہوں
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
یہ میں تسلیم کرتا ہوں تمھیں مجھ سے عداوت ہے
مگر اتنا سمجھ رکھو محبت پھر محبت ہے
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
کب چرخ کا شکوہ کرتے ہیں قسمت کو برا کب کہتے ہیں
غم ہو کہ خوشی ہو کچھ بھی ہو ہر حال میں ہم خوش رہتے ہیں
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
محبت میں ہو کر شریک تمنا خبر تم نہ لو گے تو پھر کون لے گا
نشاں میرے دل کا اثر میرے غم کا اگر تم نہ لو گے تو پھر کون لے گا
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تری تند خوئی کینہ جوئی تری کج ادائی تری بے وفائی
بلا ہے ستم ہے قیامت ہے دہائی دہائی دہائی دہائی
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
جو کچھ ملے گا وہ خدا ہی سے ملے گا
جو کچھ بھی ملا ہے وہ خدا ہی سے ملا ہے
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔


[ad_2]

Leave your vote

0 points
Upvote Downvote

Total votes: 0

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

جواب چھوڑیں

Hey there!

Forgot password?

Forgot your password?

Enter your account data and we will send you a link to reset your password.

Your password reset link appears to be invalid or expired.

Close
of

Processing files…

Situs sbobet resmi terpercaya. Daftar situs slot online gacor resmi terbaik. Agen situs judi bola resmi terpercaya. Situs idn poker online resmi. Agen situs idn poker online resmi terpercaya. Situs idn poker terpercaya.

situs idn poker terbesar di Indonesia.

List website idn poker terbaik.

Situs slot terbaru terpercaya

slot hoki terpercaya

Bergabung di Probola situs judi bola terbesar dengan pasaran terlengkap bergabunglah bersama juarabola situs judi bola resmi dan terpercaya hanya di idn poker terpercaya 2022 daftar sekarng di agen situs slot online paling baik se indonesia
trading binomo bersama https://binomologin.co.id/ daftar dan login di web asli binomo