احمد راہی کی وفات Sep 02, 2002 آج اردو اور پنجابی…

[ad_1] احمد راہی کی وفات
Sep 02, 2002

آج اردو اور پنجابی کے نامور شاعر اور فلمی نغمہ نگار احمد راہی کی برسی ہے۔
۔
12 نومبر 1923ء اردو اور پنجابی کے نامور شاعر اور فلمی نغمہ نگار احمد راہی کی تاریخ پیدائش ہے۔احمد راہی کا اصل نام غلام احمد تھا اور وہ امرتسر میں پیدا ہوئے تھے۔
1946ء میں ان کی ایک اردو نظم آخری ملاقات افکار میں شائع ہوئی جو ان کی پہچان بن گئی۔ اس کے بعد ان کا کلام برصغیر کے مختلف ادبی جرائد کی زینت بننے لگے۔ قیام پاکستان کے بعد وہ لاہور میں قیام پذیر ہوئے اور ماہنامہ سویرا کے مدیر مقرر کئے گئے۔ 1953ء میں پنجابی زبان میں ان کا شعری مجموعہ ترنجن شائع ہوا جس نے ادبی حلقوں میں بڑی پذیرائی حاصل کی
ترنجن کی نظموں میں تقسیم ہند کے وقت ہونے والے ہندومسلم فسادات میں عورتوں کے ساتھ جنسی زیادتی کو بڑے شاعرانہ طریقے سے پیش کیا گیا ہے:
ناں کوئی سہریاں والا آیا
تے ناں ویراں ڈولی ٹوری
جس دے ہتھ جد ی بانہہ آئی
لے گیا زور و زوری
(نہ کوئی سہرے والا آیا، نہ بھائیوں نے ڈولی اٹھائی، جس کے ہاتھ جو لگی وہ اسے زبردستی لے گیا)
اس مجموعے کا فلیپ سعادت حسن منٹو نے احمد راہی کی فرمائیش پر پنجابی میں لکھا اور یہی سعادت حسن منٹو کی اکلوتی پنجابی تحریر بھی ثابت ہوئی ۔

اور احمد راہی کا شمار جدید پنجابی نظم کے بانیوں میں ہونے لگا۔ کم و بیش اسی زمانے میں انہوں نے پنجابی فلموں میں نغمہ نگاری کا آغاز کیا۔ ان کی پہلی فلم بیلی تھی جس میں انہوں چار گیت لکھے تھے اور چاروں کے چاروں بہت خاصے مقبول ہوئے تھے اس کے بعد انہوں نے لاتعداد پنجابی فلموں کے لئے نغمات تحریر کئے جن میں شہری بابو، ماہی منڈا، پینگاں، چھومنتر، یکے والی ، پلکاں، گڈو، سہتی ، یار بیلی ، مفت بر، رشتہ، مہندی والے ہتھ، بھرجائی، اک پردیسی اک مٹیار، وچھوڑا، باڈی گارڈ، قسمت، ہیر رانجھا، مرزا جٹ، سسی پنوں، نکے ہوندیاں دا پیار، ناجو اور دل دیاں لگیاںکے نام سرفہرست تھے، اس کے علاوہ انہوں نے کئی اردو فلموں کے لئے بھی کئی نغمات تحریر کئے جن میں فلم آزاد، کلرک اور باجی کے نام شامل ہیں۔
احمد راہی کی دیگر تصانیف میں ان کے شعری مجموعے رت آئے رت جائے، رگ جاں اور فلمی نغمات کا مجموعہ نمی نمی وا شامل ہیں۔
احمد راہی نے متعدد ایوارڈز بھی حاصل کئے تھے جن میں سب سے بڑا ایوارڈ صدارتی تمغہ برائے حسن کارکردگی تھا جو انہیں 1997ء میں حکومت پاکستان نے عطا کیا تھا۔ احمد راہی کا انتقال 2 ستمبر بروز سوموار 2002ء کو لاہور میں ہوا اور وہ لاہور میانی صاحب قبرستان میں آسودۂ خاک ہوئے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
منتخب کلام
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

زخم کھانا تو اپنی عادت ہے
مسکرانا تو اپنی عادت ہے

روشنی ہو کہ گھپ اندھیرا ہو
دل جلانا تو اپنی عادت ہے

آپ کب تک سنبھالیے گا ہمیں
لڑکھڑانا تو اپنی عادت ہے

دوستوں کے دیے ہوئے طعنے
بھول جانا تو اپنی عادت ہے

اُن کی آنکھوں سے کیا گلہ راہی
ڈوب جانا تو اپنی عادت ہے
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دل پہ جب درد کی افتاد پڑی ہوتی ہے
دوستو! وہ تو قیامت کی گھڑی ہوتی ہے

جس طرف جائیں ، جہاں جائیں بھری دنیا میں
راستہ روکے تری یاد کھڑی ہوتی ہے

جس نے مَر مَر کے گزاری ہو ، یہ اس سے پوچھو
ہجر کی رات بھلا کتنی کڑی ہوتی ہے

ہنستے ہونٹوں سے بھی جھڑتے ہیں فسانے غم کے
خشک آنکھوں میں بھی ساون کی جھڑی ہوتی ہے

جب کوئی شخص ، کہیں ذکرِ وفا کرتا ہے
دل کو اے دوستو! تکلیف بڑی ہوتی ہے

اس طرح بیٹھے ہیں وہ آج مری محفل میں
جس طرح شیشے میں تصویر جڑی ہوتی ہے
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

دل کے سنسان جزیروں کی خبر لائے گا
درد پہلو سے جدا ہو کے کہاں جائے گا

کون ہوتا ہے کسی کا شبِ تنہائی میں
غمِ فرقت ہی غمِ عشق کو بہلائے گا

چاند کے پہلو میں دَم سادھ کے روتی ہے کرن
آج تاروں کا فسوں خاک نظر آئے گا

راکھ میں آگ بھی ہے غمِ محرومی کی
راکھ ہو کر بھی یہ شعلہ ہمیں سلگائے گا

وقت خاموش ہے روٹھے ہوئے یاروں کی طرح
کون لَو دیتے ہوئے زخموں کو سہلائے گا

دھوپ کو دیکھ کے اس جسم پہ پڑتی ہے چمک
چھاؤں دیکھیں گے تو اس زلف کا دھیان آئے گا

زندگی! چل کہ ذرا موت کا دم خم دیکھیں
ورنہ یہ جذبہ لحَد تک ہمیں لے جائے گا
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
عام ھے کوچہ و بازار میں سرکار کی بات
اب سر راہ بھی ھوتی ھے ، سردار کی بات

ھم جو کرتے ھیں کہیں مصر کے بازار کی بات
لوگ پا لیتے ھیں یوسف کے خریدار کی بات

مدتوں لب پہ رھی نرگس بیمار کی بات
کیجیئے اہل چمن ، اب خلش خار کی بات

غنچے دل تنگ ،ھوا بند ، نشیمن ویراں
باعث مرگ ھے مرے لیے غم خوار کی بات

بوئے گل لے کے صبا کنج قفس تک پہنچی
لاکھ پردوں میں بھی پھیلی شب گلزار کی بات

زندگی درد میں ڈوبی ھوئی لے ھے راہی
ایسے عالم میں کسے یاد رھے پیار کی بات
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
گردش جام نہیں ، گردش ایام تو ھے
سعی ناکام سہی ، پھر بھی کوئی کام تو ھے

دل کی بے تابی کا آخر کہیں انجام تو ھے
میری قسمت میں نہیں ، دہر میں آرام تو ھے

مائل لطف و کرم حسن دلآرام تو ھے
میری خاطر نہ سہی ، کوئی سر بام تو ھے

تو نہیں میرا مسیحا ، میرا قاتل ھی سہی
مجھ سے وابستہ کسی طور ترا نام تو ھے

حلقہ موج میں ایک اور سفینہ آیا
ساحل بحر پر کہرام کا ہنگام تو ھے
تنگ دستو ، تہی دامانو ، کرو شکر خدا
مئے گلفام نہیں ھے ، شفق شام تو ھے
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
طویل راتوں کی خامشی میں مری فغاں تھک کے سو گئ ھے
تمہاری آنکھوں نے جو کہی تھی وہ داستاں تھک کے سو گئ ھے

مرے خیالوں میں آج بھی خوب عہد رفتہ کے جاگتے ھیں
تمہارے پہلو میں خواہش یاد پاستاں تھک کے سو گئ ھے

گلہ نہیں تجھ سے زندگی کے وہ نظریے ھی بدل گئے ھیں
مری وفا ، وہ ترے تغافل کی نوحہ خواں تھک سو گئ ھے

سحر کی امید اب کسے ھے ،سحر کی امید ھو بھی کیسے
کہ زیست امید و نا امیدی کے درمیاں تھک کے سو گئ ھے

نہ جانے کس ادھیڑ بن میں الجھ گیا ھوں کہ مجھ کو راہی
خبر نہیں کچھ ، وہ آرزوئے سکوں کہاں تھک کے سو گئ ھے
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
کوئی بتلائے کہ کیا ھیں یارو
ھم بگولے کہ ھوا ھیں یارو

تنگ ھے وسعت صحرائے جنوں
ولولے دل کے سوا ھیں یارو

سرد و بے رنگ ھے ذرہ ذرہ
گرمئ رنگ صدا ھیں یارو

شبنمستان گل نغمہ میں
نکہت صبح وفا ھیں یارو

جلنے والوں کے جگر ھیں دل ھیں
کھلنے والوں کی ادا ھیں یارو

جن کے قدموں سے ھیں گلزار یہ دشت
ھم وھی آبلہ پا ھیں یارو
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
کبھی حیات کا غم ھے ، کبھی ترا غم ھے
ھر ایک رنگ میں ناکامیوں کا ماتم ھے

خیال تھا ترے پہلو میں کچھ سکون ھو گا
مگر یہاں بھی وہی اضطراب پیہم ھے

مرے حبیب مری مسکراہٹوں پہ نہ جا
خدا گواہ ، مجھے آج بھی ترا غم ھے

سحر سے رشتہء امید باندھنے والے
چراغ زیست کی لو شام ھی سے مدھم ھے

یہ کس مقام پہ لے آئی زندگی راہی
قدم قدم پہ جہاں بے بسی کا عالم ھے
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
کوئی حسرت بھی نہیں ، کوئی تمنا بھی نہیں
دل وہ آنسو جو کسی آنکھ سے چھلکا بھی نہیں

روٹھ کر بیٹھ گئ ہمت دشوار پسند
راہ میں اب کوئی جلتا ھوا صحرا بھی نہیں

آگے کچھ لوگ ھمیں دیکھ کے ھنس دیتے تھے
اب یہ عالم ھے کہ کوئی دیکھنے والا بھی نہیں

درد وہ آگ کہ بجھتی نہیں جلتی بھی نہیں
یاد وہ زخم کہ بھرتا نہیں ، رستا بھی نہیں

باد باں کھول کے بیٹھے ھیں سفینوں والے
پار اترنے کے لیے ہلکا سا جھونکا بھی نہیں
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
چند مشہور گیت
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
سن ونجلی دی مٹھڑی تان وے –
فلم: ہیر رانجھا
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
نِمّی نِمّی وا وگدی

رُکھ ڈول دے تے اکھ نئیں لگ دی
نِمّی نِمّی وا وگدی
ساہنوں ٹھگ گئی یاد اِک ٹھگ دی
نِمّی نِمّی وا وگدی

راہواں تَک تَک تَک تَک تھک دیاں نہ
اکھاں اَک دیاں نہ
ہُن بِناں دیکھنے دے رہ سَک دیاں نہ
اوہدی تاہنگ تے نالے ڈری جَگ دی
نِمّی نِمّی وا وگدی
ساہنوں ٹھگ گئی یاد اِک ٹھگ دی
نِمّی نِمّی وا وگدی

لوکاں کولوں تے لُکا لواں گی ہَس ہَس کے
جھوٹ سچ دَس کے
پَر دل کولوں میں جاواں گی کتھے نَس کے
لاٹ پیار والی لَٹ لَٹ جگ دی
نِمّی نِمّی وا وگدی
ساہنوں ٹھگ گئی یاد اِک ٹھگ دی
نِمّی نِمّی وا وگدی

جاواں پانی بھَرنے نوں تَڑکے تَڑکے
میرا دل دھڑکے
جے بُلا لیا اوہنے کِتے بانہہ پھَڑ کے
ڈھیری بھَخ پئو دَبی ہوئی اَگ دی
نِمّی نِمّی وا وگدی
ساہنوں ٹھگ گئی یاد اِک ٹھگ دی
نِمّی نِمّی وا وگدی
رُکھ ڈول دے تے اکھ نئیں لگ دی
نِمّی نِمّی وا وگدی
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
ایک نظم
ونج کرن ونجارے-ترنجن
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

نی مٹیارے

پہلاں ہس ہس لاندے
گوہڑیاں پاندے
ہس دیاں رَس دیاں مٹیاراں نوں
ہنجوآں دے وس پا کے
مڑ ٹُر جاندے
بدلاں دے پرچھانویں
نی ایہ بجلی دے لشکارے
نی مٹیارے
ونج کرن ونجارے

لیہندیوں سورج کدی نا چڑھیا دنیا جانے
بِنا ڈور نا چڑھی کدی گڈی اسمانے
ڈوہنگھے دریا ویری چھلاں
سوچ سمجھ لے ساریاں گلاں
کچے گھڑے دغا دے جاندے
پہنچ کے ادھ وچکارے

نی مٹیارے
ونج کرن ونجارے

جے کر توں جگراتے کٹنے
جے کر توں ہیرے نے چٹنے
جے کر توں راتاں نوں سورج
دن نوں لبھنے تارے
تاں تیری مڑضی مٹیارے

نی مٹیارے
ونج کرن ونجارے


[ad_2]

Leave your vote

0 points
Upvote Downvote

Total votes: 0

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

جواب چھوڑیں

Hey there!

Forgot password?

Forgot your password?

Enter your account data and we will send you a link to reset your password.

Your password reset link appears to be invalid or expired.

Close
of

Processing files…

Situs sbobet resmi terpercaya. Daftar situs slot online gacor resmi terbaik. Agen situs judi bola resmi terpercaya. Situs idn poker online resmi. Agen situs idn poker online resmi terpercaya. Situs idn poker terpercaya.

situs idn poker terbesar di Indonesia.

List website idn poker terbaik.

Situs slot terbaru terpercaya

slot hoki terpercaya

Bergabung di Probola situs judi bola terbesar dengan pasaran terlengkap bergabunglah bersama juarabola situs judi bola resmi dan terpercaya hanya di idn poker terpercaya 2022 daftar sekarng di agen situs slot online paling baik se indonesia
trading binomo bersama https://binomologin.co.id/ daftar dan login di web asli binomo