گر بہ تو افتدم نظر، چہرہ بہ چہرہ رو بہ رو شرح دہم …

[ad_1] گر بہ تو افتدم نظر، چہرہ بہ چہرہ رو بہ رو
شرح دہم غم ترا، نکتہ بہ نکتہ مو بہ مو
از پئے دیدن رخت ہمچو صبا فتادہ ام
خانہ بہ خانہ در بہ در، کوچہ بہ کوچہ کو بہ کو
می رود از فراق تو خون دل از دو دیدہ ام
دجلہ بہ دجلہ، یم بہ یم، چشمہ بہ چشمہ جو بہ جو
دور دہان نتگۃ تو، عارض عنبرین خطت
غنچہ بہ غنچہ گل بہ گل، لالہ بہ لالہ بو بہ بو
ابرو چشم و خال تو، صید نمودہ مرغ دل
طبع بہ طبع، دل بہ دل، مہر بہ مہر، خو بہ خو
مہر ترا دل حزیں، بافتہ بر قماش جاں
رشتہ بہ رشتہ نخ بہ نخ، تار بہ تار پو بہ پو
در دل خویش طاہرؔہ گشت و نہ دید جز ترا
صفحہ بہ صفحہ، لا بہ لا، پردہ بہ پردہ تو بہ تو
​قراۃ العین طاہرہ
زرین تاج قرۃاالعین طاہرہ کی تاریخِ ولادت کا پتہ نہیں لیکن انکی موت 1852ء میں ہوی اور ان کی صرف دو غزلیں ملتی ہیں – قراۃ العین طاہرہ فارسی کی مشہور شاعرہ رہ چکی ہیں ، بہائی مذہب سے ان کا تعلق تھا اسی وجہ سے نہائت بے دردی سے انہیں قتل کیا گیا تھا ۔ خاوند ایران کے ایک مجتہد تھے ان سے طلاق لے لی تھی ۔صاحب دیوان تھیں ۔
…..
نذرِ قرۃ العین طاہرہ
تجھ پہ اگر نظر پڑے تُو جو کبھی ہو رُو برُو
دل کے معاملے کروں تجھ سے بیان دُو بدُو
ہے تیرے غم میں جانِ جاں آنکھوں سے خونِ دل رواں
دجلہ بہ دجلہ یم بہ یم، چشمہ بہ چشمہ جُو بہ جُو​
قوسِ لب و خُمِ دَہن، پہ دو زلفِ پُر شکن
غنچہ بہ غنچہ گل بہ گل لالہ بہ لالہ بُو بہ بُو
دامِ خیالِ یار کے ایسے اسیر ہم ہوئے
طبع بہ طبع دل بہ دل مہر بہ مہر خُو بہ خُو
ہم نے لباس درد کا قالبِ جاں پہ سی لیا
رشتہ بہ رشتہ نخ بہ نخ تار بہ تار پو بہ پو
نقش کتابِ دل پہ تھا ثبت اسی کا طاہرہؔ
صفحہ بہ صفحہ لا بہ لا پردہ بہ پردہ تو بہ تو
شیشۂ ریختہ میں دیکھ لعبتِ فارسی فرازؔ
خال بہ خال خد بہ خد نکتہ بہ نکتہ ہو بہ ہو
احمد فراز
…..
علامہ اقبالؒ کی غزل بمعہ سلیس نثری ترجمہ حسب ذیل ہے:
نوای طاہرہ
گر بتو افتدم نظر چہرہ بہ چہرہ ، روبرو
شرح دہم غم ترا نکتہ بہ نکتہ ، موبمو
اگر تجھ پہ میری نظر کچھ اس طرح پڑےکہ تو میرے بالکل سامنے ہو اور تیرا چہرہ میرے چہرے کے سامنے ہوتو پھر میں تیرے غم عشق کی تفصیل ایک ایک گہری بات اور رمز سے بیان کروں
از پی دیدن رخت ہمچو صبا فتادہ ام
خانہ بخانہ در بدر ، کوچہ بکوچہ کوبکو
تیرا چہرہ دیکھنے کے لیےمیں صبح کی نرم ولطیف ہوا کی مانند چلی پھری ہوں اور میں گھر گھر ،در در ،کوچہ کوچہ اور گلی گلی پھری ہوں
میرود از فراق تو خون دل از دو دیدہ ام
دجلہ بہ دجلہ یم بہ یم ، چشمہ بہ چشمہ جوبجو
تیرے فراق میں میرا خون دل میری آنکھوں سے رواں ہے اور وہ دریادریا،سمندر سمندر،چشمہ چشمہ اور ندی ندی بہہ رہا ہے
مہر ترا دل حزین بافتہ بر قماش جان
رشتہ بہ رشتہ نخ بہ نخ ، تار بہ تار پو بہ پو
میرے غمزدہ دل نے تیری محبت کو جان کے قماش پر بن لیا ہے،دھاگہ دھاگہ ،باریک باریک، تار تار اور تانا بانا خوب ملا کر بن لیا
در دل خویش طاہرہ ، گشت و ندید جز ترا
صفحہ بہ صفحہ لا بہ لا پردہ بہ پردہ تو بتو
طاہرہ نے اپنے دل کے اندر نظر ڈالی مگر اسے دل کے صفحہ صفحہ،گوشہ گوشہ پردہ پردہ اور تہہ در تہہ تیرے سوا کوئی نظر نہ آیا
سوز و ساز عاشقان دردمند
شورہای تازہ در جانم فکند
اہل درد عاشقوں کے پر سوز ہنگاموں نے میری جاں میں نئے ہنگامے برہا کردیے
مشکلات کہنہ سر بیرون زدند
باز بر اندیشہ ام شبخون زدند
پرانی مشکلات نے اپنا سر اٹھا لیا اور ایک مرتبہ پھر میری فکر پر شب خون مارا
قلزم فکرم سراپا اضطراب
ساحلش از زور طوفانی خراب
میری فکر کا سمندر پوری طرح طوفان خیز بن گیا اور طوفان کی شدت سے اس کا ساحل خراب ہو گیا
گفت رومی “وقت را از کف مدہ
اے کہ می خواہی کشود ہر گرہ
رومی نے کہا جو اپنی ہر مشک کا خواہاں ہے ، تو وقت کو ہاتھ سے نہ جانے دے
چند در افکار خود باشی اسیر
“این قیامت را برون ریز از ضمیر
تو کب تک اپنے افکار میں اسیر رہے گا۔ضمیر کا یہ بوجھ باہر گرا دے
…..
کس کا جمال ناز ہے جلوہ نما یہ سو بسو
گوشہ بگوشہ دربدر قریہ بہ قریہ سو بسو
اشک فشاں ہے کس لیے دیدہ منتظر میرا
دجلہ بہ دجلہ یم بہ یم چشمہ بہ چشمہ جو بجو
میری نگاہ شوق میں حسن ازل ہے بے حجاب
غنچہ بہ غنچہ گل بہ گل لالہ بہ لالہ بو بہ بو
تیرا تصور جمال میرا شریک حال ہے
نالہ بہ نالہ غم بہ غم نعرہ بہ نعرہ ہو بہ ہو
کاش ہو ان کا سامنا عین حریم ناز میں
چہرہ بہ چہرہ رخ بہ رخ دیدہ بہ دیدہ دو بہ دو 
رئیؔس امروہی
……
قرۃ ا لعین طاہرہ…. ترجمہ: تابش دہلوی
تجھ پہ میری نظر پڑے ، چہرہ بہ چہرہ ، رُو بہ رُو
میں تیرا غم بیاں کروں ، نکتہ بہ نکتہ ، مو بہ مو
میں تیری دید کے لئے مثل ِ صبا رواں رواں
خانہ بہ خانہ ، در بہ در ، کوچہ بہ کوچہ ، کُو بہ کو
ہجر میں تیرے خوں ِ دل آنکھ سے ہے میری رواں
د جلہ بہ د جلہ ، یم بہ یم ، چشمہ بہ چشمہ ، جو بہ جو
یہ تیری تنگئی د ہن ، یہ خط ِ روئے عنبریں
غنچہ بہ غنچہ ، گُل بہ گل ، لالہ بہ لالہ ، بو بہ بو
ابرو و چشم و خا ل نے صید کیا ہے مرغ ِ دل
طبع بہ طبع ، دل بہ دل ، مہر بہ مہر ، خو بہ خو
تیرے ہی لطف ِ خاص نے کر دئے جاں و دل بہم
رشتہ بہ رشتہ ، نخ بہ نخ ، تار بہ تار ، پو بہ پو
قلب میں طا ہرہ کے اب کچھ بھی نہیں تیرے سوا
صفحہ بہ صفحہ ، لا بہ لا ، پردہ بہ پر د ہ ، تو بہ تو


[ad_2]

Leave your vote

0 points
Upvote Downvote

Total votes: 0

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

جواب چھوڑیں

Hey there!

Forgot password?

Forgot your password?

Enter your account data and we will send you a link to reset your password.

Your password reset link appears to be invalid or expired.

Close
of

Processing files…

Situs sbobet resmi terpercaya. Daftar situs slot online gacor resmi terbaik. Agen situs judi bola resmi terpercaya. Situs idn poker online resmi. Agen situs idn poker online resmi terpercaya. Situs idn poker terpercaya.

situs idn poker terbesar di Indonesia.

List website idn poker terbaik.

Situs slot terbaru terpercaya

slot hoki terpercaya

slot online gacor Situs IDN Poker Terpercaya slot hoki rtp slot gacor slot deposit pulsa
Bergabung di Probola situs judi bola terbesar dengan pasaran terlengkap bergabunglah bersama juarabola situs judi bola resmi dan terpercaya hanya di idn poker terpercaya 2022 daftar sekarng di agen situs slot online paling baik se indonesia
trading binomo bersama https://binomologin.co.id/ daftar dan login di web asli binomo