(درمدحِ حضرت سیِّد شاہ جلال الدین احمدکاکوی) اےدل…

[ad_1] (درمدحِ حضرت سیِّد شاہ جلال الدین احمدکاکوی)

اےدل وجاں کے رہزن و قزّاق !
اے عروسِ بلادِچُست و چاق !
اف وہ ایمان کش ادا تیری
ہوش کی چور,عقل کی سرّاق
کچھ پیمبرتوکچھ ہوئے پاگل
دیکھ کرتیراجلوۂِ حرّاق
پھوٹا پڑتاہے یوں شباب ترا
جیسے ساغرہ و مائلِ ادہاق
تجھ میں ہنگامِ رنگ و بُو ہردم
وقتِ مغرب ہویا دمِ اشراق
میری باتوں پہ کریقین کہ میں
منہہ نہیں کھولتابَہ جُز اصداق
تجھ میں موجود موجِ رعنائی
ہے کسی کی رہینِ استغراق
میں بتاؤں,اسی کے زیرِ قدم
توہوئی مہر و ماہ کے مصداق
اس کے ہی خاکِ پا سے ہیں روشن
تیری ہرہست و بود کے آفاق
تیری حالت تو اس کے غیبت میں
جیسے صدّام کے بغیر عراق
(ق)
توجو پابوس اس کی ہے تو رہ
میں منافق نہیں کروں جو نفاق
دور رکّھے مجھے خدا شر سے
کوئی مجھ سے نہ ہو کبھی ناچاق
اس سے مطلوب ہے تجھے آتش
مجھ کو ملحوظ اس سے ہے چقماق
منتظرہیں عطا کے ہم دونوں
تجھ کو معراج اور مجھے برّاق
(ق)
کس تنازع میں پھنس گیا میں بھی
بھول کرصبر و ضبط کے اسباق
یخ زدہ ہوگئی فَضا تسلیمؔ !
آ کہ روشن کریں غزل سے طباق
غزل
وصل پربھی ہو فصل کا اطلاق
زہرسے کم نہیں ہے یہ تریاق
سرمیں سودا جو کر نہ دے بے دار
چاہیے ایسی فصلِ گل سے طلاق
ناخلَف ہے جہاں سو میں نے اسے
کردیا اپنے “کچھ نہیں” سے عاق
کہہ دیا ہم نے جو بھی کہنا تھا
اب وہ کھوجا کریں سیاق وسباق
پیش دستی پہ ہے ہوس مائل
پاؤں دابوں کہ دیکھوں اس کی ساق
نہیں لیتے وہ میرادل تو نہ لیں
شہرمیں اور بھی تو ہیں اسواق
مطلع ِثانی
آسماں کے چہاردہ اطباق
میرے خامہ کو ہو گئے اوراق
مدح مقصودہے مجھے اس کی
خوش جہانی سے جس کا ہے میثاق
اس کی نسبت ہے شہرِکاکو سے
جیسے حاتم کاطَے سے ہے الحاق
نامِ نامی جلال ہے اس کا
معِ اقبال اورمع الاسباق
عقل و جذبات کاجواں جمہور
فکر و اظہارکاحسین وفاق
وہ سخاوت کہ ڈھونڈلے کوئی
اس سا دیوانہ اس کے جیسا مراق
وہ وجاہت کہ ہرزلیخا کو
رشکِ حُسنِ نبیرۂِ اسحاق
اور وہ سطوت کہ سو عزیزِ مِصر
ایک اس سے ہوں طالبِ اشفاق
(ق)
ناصیہ سا ہے شاعری اس کی
خودک و کہتا نہیں ہے گو خلاّق
یوں ہی آتی نہیں دقیقہ رَسی
کوٹ کرخود کو وہ ہؤا دقّاق
اس کی تحریر ہے کہ والقدُّوس
اس کی تقریرہے کہ والرّزاق
منفرد سب سے اس کاذوقِ جمال
مختلف سب سے اس کاحُسنِ مذاق
روبرو اس کے اشہرانِ شہر
کوئی حلاّج ہے’ کوئی حلاّق
شہرۂِ اوج اس کا سُن سن کر
ہے ثریابھی دیدکی مشتاق
“تانہ بخشدخداے بخشندہ”
حُسن والوں پہ اس کا استحقاق
دیکھ لیں اس کوجو پری زادے
چاہ لیں دفعتاً پَروں سے فراق
حوت سے ہو گریز پا زہرہ
اورلیلٰی ہو قیس سے بے باق
اس کی تسلیمؔ ! عشق آرائی
کیوں نہ گزرے ہوَس شعاروں کوشاق !
یہ نیازیؔ ! کرم اسی کاہ ے
میں جو ہوں مِیرِ مجلسِ عشّاق

( تسلیمؔ نیازی)


Leave your vote

0 points
Upvote Downvote

Total votes: 0

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

جواب چھوڑیں

Hey there!

Forgot password?

Forgot your password?

Enter your account data and we will send you a link to reset your password.

Your password reset link appears to be invalid or expired.

Close
of

Processing files…

Situs sbobet resmi terpercaya. Daftar situs slot online gacor resmi terbaik. Agen situs judi bola resmi terpercaya. Situs idn poker online resmi. Agen situs idn poker online resmi terpercaya. Situs idn poker terpercaya.

situs idn poker terbesar di Indonesia.

List website idn poker terbaik.

Situs slot terbaru terpercaya

Bergabung di Probola situs judi bola terbesar dengan pasaran terlengkap bergabunglah bersama juarabola situs judi bola resmi dan terpercaya hanya di idn poker terpercaya 2022 daftar sekarng di agen situs slot online paling baik se indonesia
trading binomo bersama https://binomologin.co.id/ daftar dan login di web asli binomo